لاہور ہائیکورٹ ،عمران خان کی 121 مقدمات میں کارروائی روکنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

151

لاہور:لاہور ہائیکورٹ نے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی 121مقدمات میں کارروائی کی روکنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔ لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں 5رکنی بینچ نے عمران خان کی 121مقدمات کے اخراج کی سمیت دیگر درخواستوں پر سماعت کی۔

عمران خان کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ نگرا ن حکومت جو کررہی ہے ایسا تاریخ میں کبھی نہیں ہوا، نگراں حکومت کا کام صرف الیکشن کرانا ہے، 71سال کے بندے پر بے شمار مقدمات درج کئے گئے ۔جسٹس انوار الحق پنوں نے ریمارکس دیئے کہ آپ کا کیس غیر معمولی ہے۔ فاضل جج کے ریمارکس پر عدالت میں قہقہے لگ گئے۔

عمران خان کے وکیل سلمان صفدر نے کہا کہ جی عمران خان اس عمر میں بھی فٹ ہیں، غیرقانونی مقدمات اور گرفتاریوں سے روکا جائے، ویڈیو لنک پر پیشی کی استدعا منظور ہوجائے تو کیسز کم ہوجائیں گے۔عدالت نے کہا کہ کیا ہر مقدمے کی ویڈیو لنک پر پیشی کا حکم دیا جاسکتا ہے؟ ویڈیو لنک پیشی کے لیے متعلقہ عدالت ہی فیصلہ کرسکتی ہے۔

جسٹس علی باقر نجفی نے ریمارکس دئیے کہ آپ کے ساتھ کچھ نیا نہیں ہورہا، ماضی میں رہنمائوں کی اسی طرح پیشیاں ہوئیں۔بعدازاں عدالت نے وکلا کے دلائل مکمل ہونے پر عمران خان کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا۔