خیبر پختونخوا حکومت کا ڈرون کیمرے استعمال کرنے کا فیصلہ

162

پشاور: خیبرپختونخوا میں قدرتی آفات اور پولیس آپریشنز کے دوران ڈرون کیمرے استعمال کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

 صوبے میں ڈرون کیمرے پولیس، زراعت، معدنیات اور محکمہ ریسکیو کے لیے استعمال کیے جائیں گے۔ وزیر اعلی خیبر پختونخوا محمود خان نے منصوبے پر عملدرآمد کی منظوری دے دی۔

وزیر اعلی خیبر پختونخوا محمود خان نے کہا کہ ڈرون ٹیکنالوجی سے پولیس کی آپریشنل اور تفتیشی صلاحیتوں میں بہتری آئے گی جبکہ ڈرونز کے ذریعے پٹرولنگ سے پولیس اہلکاروں کی جانوں کو محفوظ کیا جا سکے گا۔

انہوں نے کہا کہ ڈرونز کے ذریعے ریسکیو آپریشنز میں بھی خاطر خواہ بہتری ممکن ہو گی اور منصوبہ مثر پولیسنگ کی طرف اہم سنگ میل ثابت ہو گا۔ وزیر اعلی خیبر پختونخوا نے پہلے مرحلے میں محکمہ پولیس اور پی ڈی ایم اے میں ڈرون ٹیکنالوجی کے استعمال کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ دوسرے مرحلے میں منصوبے کو معدنیات، زراعت اور دیگر شعبوں تک توسیع دی جائے۔

 وزیر اعلی کو دی گئی بریفنگ میں بتایا گیا کہ ڈرون منصوبے کا ابتدائی تخمینہ لاگت 500 ملین روپے ہے اور پہلے مرحلے میں ڈویژنل ہیڈکوارٹرز سے منصوبے کا اجرا کیا جائے گا۔