کراچی کی نئی مردم شماری میں دھاندلی قبول نہیں، حافظ نعیم

283

کراچی:امیرجماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ کراچی کی اصل اور حقیقی آبادی پرکوئی سمجھوتہ اور نئی مردم شماری میں دھاندلی کسی صورت قبول نہیں کی جائے گی۔

حافظ نعیم الرحمن نے کہاکہ کراچی کی آبادی کو پورا گنا جائے اور جو جہاں رہتا ہے اسے وہیں کا رہائشی شمار کیا جائے،نئی مردم شماری ڈیجور  (Dejure)بنیادوں پر کرانے کے بجائے دنیا بھر میں رائج ڈی فیکٹو (Defacto) اسٹینڈرڈ کے تحت کرائی جائے اور کراچی کی حقیقی آبادی کی بنیاد پر ہی قومی و صوبائی اسمبلیوں میں نمائندگی اور وسائل فراہم کیے جائیں۔

انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی کی حق دو کراچی تحریک ہر شہری اور یہاں رہنے والے ہر زبان بولنے والوں کی تحریک ہے۔ کراچی کو اس جائزاور قانونی حق ملے گا تو ہر شہری کو اس کا حق ملے گا اور سب کے مسائل حل ہوں گے۔

حافظ نعیم الرحمن نے عوام سے اپیل کی کہ 28اگست کو بلدیاتی انتخابات میں ترازو پر مہر لگا ئیں اور جماعت اسلامی کے امیدواروں کو کامیاب بنائیں۔ جماعت اسلامی کی کامیابی شہر میں تعمیر و ترقی کی ضمانت ہے،جس طرح نعمت اللہ خان ایڈوکیٹ کے دور میں شہر میں تعمیر و ترقی کی مثالیں قائم کی گئی تھیں اسی طرح کراچی میں ہمارا میئر ہو گا تو تعمیر و ترقی کا سفر از سر نو شروع کیا جائے گا۔

امیر جماعت اسلامی کراچی کا کہنا تھا کہ  ہم ایم کیو ایم کے میئر کی طر ح صرف اختیارات و وسائل کی کمی کا رونا رونے کے بجائے عوام کی خدمت کریں گے اور عوام کو مایوس کرنے اور عوامی مینڈیٹ کا سودا کرنے کے بجائے وفاقی و صوبائی حکومتوں سے اہل کراچی کا جائز اور قانونی حق لیں گے۔

انہوں نے مزید کہاکہ کراچی سے مینڈیٹ لینے والوں نے حکومت حاصل کرنے کے بعد کراچی کے لیے عملاً کچھ نہیں کیا۔ آج بھی وزارتوں کے مزے تو لیے جا رہے ہیں لیکن وڈیروں اور جاگیرداروں کو ہی مضبوط کیا جا رہا ہے۔ پیپلز پارٹی 14سال سے مسلسل حکومت میں ہے لیکن اس نے کراچی کے دیرینہ مسائل حل نہیں کیے۔ ایم کیو ایم بھی کئی مرتبہ حکومت میں رہی اور پی ٹی آئی نے بھی ساڑھے تین سال حکومت کی لیکن پیکیجز کے اعلانات کے سوا کچھ نہیں کیا گیا۔