برطانیہ نے اسٹار وارز طرز کے لیزر ہتھیار کی آزمائش شروع کر دی

208

لندن: برطانیہ نے اسٹار وارز طرز کے ایسے لیزر ہتھیار کی آزمائش شروع کر دی ہے جو 6 میل کے فاصلے کی دوری تک ڈرون اور راکٹوں کو مار گِرانے کی صلاحیت رکھتے ہوں گے۔

دفاعی کمپنی ریتھیون یو کے کی جانب سے اعلان کیا گیا ہے کہ وہ آئندہ برس لِوِنگسٹون میں ایڈوانس لیزر اِنٹیگریشن سینٹر کا افتتاح کریں گے،کمپنی حکام کا کہنا تھاکہ یہ نیا یورپی مرکز دفاعی ہائی اینرجی لیزر ہتھیاروں کی آزمائش، تعیناتی اور دیکھ بھال پر توجہ دے گا۔

یہ ہتھیار شدید شعاﺅں والی روشنی سے ڈرونز، راکٹ اور مارٹر گولوں کو مار گِرانے کے لیے ڈیزائن کیے جائیں گے،یہ ہتھیار برطانوی فوج کے زیر استعمال چھ پہیوں والی ہیوی بکتر بند وولف ہانڈ لینڈ وہیکل پر نصب کیے جائیں گے۔

ریتھیون انٹیلی جینس اور اسپیس میں ہائی اینرجی لیزرز کے سینئر ڈائریکٹر مائیکل ہوفل کا کہنا تھا کہ سب نے دیکھا ہے کہ ڈرونز، راکٹ اور مارٹر جیسے خطرات ایک سنجیدہ مسئلہ ہے اور ان کو شکست دینے کے لیے مو¿ثر لاگت والے لیزر کی طلب بڑھ رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ برطانیہ میں جدید انٹیگریشن فیسیلیٹی کاقائم کیا جانا ہماری ٹیکنالوجی کی پختگی اور آسمانوں کے دفاع کے لیے ہمارے گاہکوں کی ضرورت کی فراہمی کے عزم کامظاہرہ کرتا ہے،ماہرین کے مطابق مستقبل میں فضائی دفاع کا 30 فی صد تک انفرااسٹرکچر ہائی اینرجی لیزرز پر مشتمل ہوسکتا ہے۔