دودھ کو ابال کر کیوں پینا چاہیے؟

170

یہ بات طے کرنا کافی مشکل ہے کہ انسانی صحت کے لیے کس قسم کی خوراک اچھی ہے اور کونسی نقصان دہ ہے ۔لیکن ماہرین کی رائے کے مطابق عمل کرتے ہوئے یہ بھی بآسانی طے کیا جا سکتا ہے ۔بہت سے لوگوں کا خیال ہے کہ دودھ کو ہمیشہ ابال کر استعمال کرنا چاہیے لیکن وہیں کچھ لوگوں کا کہنا ہے کچا دودھ زیادہ فائدہ مند ہوتا ہے لیکن اب یو ایس سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پریوینٹیشن کی تحقیق کے مطابق کچا دودھ پینے کے نتیجے میں پیٹ کے سنگین امراض کا خطرہ بڑھا سکتا ہے۔کچا دودھ پینا صحت کے لیے تباہ کن ثابت ہوسکتا ہے۔یہ بات امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی۔تحقیق کے مطابق کچے دودھ میں ایسے نقصان دہ بیکٹریا ہوتے ہیں جو کہ شدید فوڈ پوائزننگ کا باعث بنتے ہیں۔
تحقیق کے دوران یہ بات سامنے آئی کہ 750 افراد کچا دودھ پینے کے نتیجے میں اوسطاً بیمار ہورہے ہیں جن میں سے متعدد کو ہسپتالوں میں داخل ہونا پڑتا ہے۔
محققین کا کہنا تھا کہ دودھ کو ابالے بغیر استعمال کرنا اس میں موجود بیکٹریا کے باعث امراض کا خطرہ 96 فیصد تک بڑھا دیتا ہے۔
دودھ کو ابالنے سے بیکٹریا کو ختم کردیتا ہے مگر اس کے بغیر پینا جراسیم کو جسم میں داخل ہونے کا موقع دیتا ہے جس کے نتیجے میں فوڈ پوائزننگ کا خطرہ بہت زیادہ بڑھ جاتا ہے۔