کراچی اور حیدرآباد میں مزید سخت اقدامات کرنیکا فیصلہ، وزیراعلیٰ

179

کراچی: وزیراعلیٰ سندھ نے صوبہ سندھ میں کورونا وائرس کی تازہ ترین صورتحال جاننے کے لئے منعقدہ کوویڈ ٹاسک فورس کے اجلاس میں حیدرآباد اور شرقی کراچی میں کورونا کی تشویشناک صورتحال کے پیش نظر مزید سخت اقدامات اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق  وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی صدارت میں کورونا وائرس ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا اور اجلاس میں تازہ ترین صورتحال کا جائزہ لیا گیا اور کورونا کی موجودہ تشویشناک صورتحال کے پیشنظر کراچی اور حیدرآباد میں مزید سخت اقدامات اٹھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

کوویڈ ٹاسک فورس کے اجلاس کے دوران وزیراعلیٰ سندھ کو کورونا وائرس کی تیسری لہر پر بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ سندھ میں صحتیابی کی شرح 93 فیصد ہے اور شرح اموات 1.6 فیصد ہے اور صوبہ بھر میں 5.4 فیصد مثبت کیسز ہیں جبکہ اپریل میں 154 مریض اس وباء سے انتقال کر گئے تھے۔

اجلاس میں آگاہی کے دوران مزید بتایا گیاکہ گزشتہ 7 دنوں میں کراچی میں 10.42 فیصد، حیدرآباد میں 14.52 فیصد کیسز  اور سکھر میں 5.48 فیصد کیسز ظاہر ہوئے ہیں جبکہ مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ  صوبے بھر میں کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی ہو رہی ہے۔

خیال رہے اجلاس میں صوبائی وزراء، ڈاکٹر عذرہ پیچوہو، سعید غنی، جام اکرام اللّٰہ دھاریجو، ناصر شاہ، چیف سیکریٹری ممتاز شاہ، مشیر مرتضیٰ وہاب، قاسم سومرو، آئی جی سندھ، ایڈیشنل چیف سیکریٹری، پرنسپل سیکریٹری، کمشنر کراچی، سیکریٹری فنانس، سیکریٹری ایجوکیشن، سیکریٹری صحت، ڈاکٹر باری، ڈاکٹر فیصل، کورپس فائیو، رینجرز اور ڈبلیو ایچ او کے نمائندہ نے شرکت کی۔

وزیراعلیٰ سندھ کی جانب سے  پولیس اور کمشنر کراچی کو ہدایت دی گئی ہے کہ جہاں جہاں کورونا ایس او پیز کی خلاف ورزی ہورہی ہے وہاں  سختی سے ایس او پیز پر عمل کروایا جائے۔

واضح رہے اجلاس کے دوران وزیر اعلیٰ سندھ کی جانب سے وزراء کی ڈیوٹی لگائی گئی ہے کہ وہ شہر کا دورہ کریں اور ان کے دوروں سے لوگوں میں ایس او پیز پر عمل کرنے میں مدد ملے گی۔