شرجیل میمن کا نام ای سی ایل پر ہے فرار ہونے کا امکان نہیں، فیصلہ جاری

116

اسلام آباد ہائیکورٹ نے  شرجیل میمن کی روشن سندھ کیس میں ضمانت کا تفصیلی فیصلہ جاری کر دیا۔

اسلام آباد  ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے8 صفحات پر مشتمل فیصلہ جاری کیا ہے۔ فیصلے کے مطابق  شرجیل میمن 2سال گرفتار رہے، نیب سے اب بھی تفتیش میں تعاون کر رہے ہیں  اس سٹیج پر شرجیل میمن کو قید کر کے آزادی چھین لینا ناانصافی ہو گی ۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ شرجیل میمن اگر تفتیش میں تعاون نہ کریں تو نیب ضمانت منسوخی کیلئے رجوع کر سکتا ہے شرجیل میمن کا نام بھی ای سی ایل پر ہے، ملک سے فرار ہونے کا امکان بھی نہیں۔

فیصلے کے مطابق جعلی اکاؤنٹس میں رقوم جمع کرانے میں شرجیل میمن کا کردار ابھی مزید قابل تفتیش ہے شرجیل میمن کے وارنٹس تب جاری ہوئے جب ایک کیس میں ضمانت ہونے والی تھی خارج از امکان نہیں یہ وارنٹس محض شرجیل میمن کو ہراساں کرنے کے لیے جاری کیے گئے ہوں۔

واضح رہے کہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے گزشتہ برس شرجیل میمن کی ضمانت کا مختصر فیصلہ سنایا تھا۔