کیا خروج وعودہ ویزے کی ازخود توسیع ہوجائے گی؟

222

ریاض: سعودی محکمہ پاسپورٹ نے خروج وعودہ (ایگزٹ ری انٹری) ویزے پر مملکت سے جانے والے تارکین وطن کے لیے اہم وضاحت جاری کی ہے۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹس کے مطابق کورونا وبا کے پیش نظر سعودی حکومت نے پاکستان سمیت 20 ممالک پر یکطرفہ عارضی سفری پابندی عائد کررکھی ہے اور پابندی کے خاتمے کی کوئی تاریخ بھی واضح نہیں دی گئی جبکہ اسی حوالے سے ایک شہری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر محکمہ پاسپورٹ سے سوال کیا ہے کہ سفری پابندی کے باعث سعودی عرب نہیں آسکتا اور خروج وعودہ کی معیاد ختم ہونے میں صرف دس دن باقی ہیں ، تو کیا حکومت کی جانب سے میرے خروج وعودہ ویزے کی ازخود توسیع ہوجائے گی؟

میڈیا رپورٹس کے مطابق محکمے نے وضاحت پیش کی کہ آن لائن پلیٹ فارم ابشر پر ایگزٹ ری انٹری اور اقامے کی مدت ختم ہونے پر توسیع ممکن ہے لیکن اس کے لیے مطلوبہ فیس ادا کرنی ہوگی۔

خیال رہےکہ مطلوبہ فیس صرف آجر کے ابشر اکاؤنٹ سےممکن ہے اور کارکن از خود اپنے اکاؤنٹ سے اقامے یا ویزے کی تجدید نہیں کراسکتا جبکہ خروج وعودہ کی توسیع فیس فی ماہ 100 ریال ہے۔

دوسری جانب خروج وعودہ ویزا حاصل کرنے کے بعد سفر نہ کرنے کے حوالے سے جوازات (لائسنس آفس) سے ایک شخص نے دریافت کیا کہ گھریلو ڈرائیور (سائق خاص) کا خروج عودہ ایکسپائر ہو گیا ہے کیا کوئی رعایت ہے؟

 محکمہ جوازات کا کہنا تھا کہ قانون کے مطابق خروج وعودہ (ایگزٹ ری انٹری) ویزا ایکسپائر ہونے سے قبل سفر نہ کرنے کی صورت میں اسے کینسل کرانا لازمی ہوتاہے۔

واضح رہے سعودی عرب میں غیر ملکیوں کے لیے اقامہ اور رہائشی قوانین واضح ہیں جن پر عمل کرنا سب کے لیے لازمی ہے جبکہ آجر اور اجیر (ملازم) کے حوالے سے بھی قوانین موجود ہے ان سے آگاہی بھی ضروری ہے۔