عام جوتوں کی ایک خصوصیت جو پاؤں میں طبی مسئلے کا سبب بن سکتا ہے

204

زیادہ تر جوتے ، خاص طور پر جوتے کا اگلا حصہ اوپر کی طرف موڑا ہوا ہوتا ہے۔ اگرچہ اس خطے کو ، جسے toe spring کہا جاتا ہے ، قدم بڑھانے کو زیادہ آرام دہ اور آسان بناتا ہے لیکن اس سے پاؤں کمزور ہوسکتے ہیں۔

یہ نتیجہ ہارورڈ کے ارتقائی حیاتیات کے ماہر ڈینیل ای ، ان کے سابق انڈرگریجویٹ طالب علم اولیور بی ہینسن ، اور دو سابقہ ​​ڈاکٹریٹ محققین ، فریڈی سیٹنگ اور نکولس بی ہولوکا نے پایا ، جنھوں نے جوتے میں موجود انگلیوں کے اسپرنگس کا مطالعہ کیا اور بائیو مکینکس پر ان کے اثرات پر تحقیق کی ہے۔

سائنسی رپورٹس کے ایک نئے ایڈیشن میں ان کی تحقیق تفصیلی ہے۔ سائنسدانوں نے پایا کہ جوتا آگے سے جتنا زیادہ مڑا ہوا ہوگا ، جوتوں کے اندر پاؤں کی طاقت اتنی ہی کم ہوگی کیونکہ جوتے کی سطح زمین کی سطح جیسے ہموار نہیں ہوتی جس کا مطلب ہے کہ پیروں کے پٹھے کم کام کرتے ہیں۔

محققین کا کہنا ہے کہ اس امکانی کمزوری سے لوگوں کو plantar fasciitis جیسے طبی مسئلے سے دوچار ہونا پڑسکتا ہے۔ یہ ایک عام مسئلہ ہے مگر اس کا علاج مشکل ہے۔ اس میں پاؤں کی انگلیوں اور ایڑھی کی ہڈیوں کو جوڑے والے ٹشوز میں شدید اور تکلیف دہ سوجن آجاتی ہے۔