طالبہ کو ہراساں کرنے پر بی جے پی رہنما کی پٹائی

102

کالج کی ایک طالبہ کو جنسی طور پر ہراساں کرنے پر بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے قانون ساز اسمبلی کے سابق رُکن کو متاثرہ کے اہل خانہ اور مقامی رہائشیوں نے خوب مارا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والے اس واقعے کی ایک ویڈیو میں سابق قانون ساز اسمبلی ممبر مایا شنکر پاٹھک ، جو بھگٹوا کے علاقے میں ایک کالج کے چیئرمین ہیں، نے اپنے ہی کالج کی طلبہ کو ہراساں کیا جس پر لڑکی کے گھر والے اور مقامی رہائشی اُن کے دفتر میں گھس گئے اور انہیں پیٹنا شروع کردیا۔

مار کھانے کے بعد بی جے پی رہنما نے معذرت کی جس کے بعد اہل خانہ نے پولیس سے اس معاملے کی شکایت نہیں کی تاہم ویڈیو وائرل ہوگئی۔

واضح رہے کہ پاٹھک چراگاؤں اسمبلی سے دو بار بی جے پی کے رکن اسمبلی منتخب ہوچکے ہیں۔ وہ گاؤں بلوا پہاڈیا میں ایک انجینئرنگ کالج کے چیئرمین ہیں۔