امریکا: مسافر کو مطمئن کرنے کے لیے مسلمان خاتون طیارہ بدر

129

واشنگٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکا میں ایک مسلمان خاتون کو صرف اس بنیاد پر جہاز سے زبردستی اتار کر گرفتار کرلیا گیا کیوں کہ ایک دوسرے مسافر نے شکایت کی تھی کہ وہ اس خاتون کی موجودگی میں بہتر محسوس نہیں کررہا۔ یہ واقعہ امینی الختیتبہ نامی خاتون کے ساتھ پیش آیا، جو اُردنی نژاد مریکی بلاگر اور سیاسی کارکن ہیں۔ امینی نے ٹوئٹر پوسٹ میں بتایا کہ جب وہ نیو جرسی میں ایک ڈومیسٹک فلائٹ سے سفر کے لیے ہوائی اڈے پر سیکورٹی کلیئرنس کرانے کے لیے قطار میں کھڑی تھیں تو ایک شخص نے قطار کو نظر انداز کرتے ہوئے میرے آگے اپنا سامان رکھ دیا۔ خاتون کے مطابق جب میں نے اُسے کہا کہ وہ بھی دیگر افراد کی طرح انتظار کرسکتا ہے، تو اس نے ناگواری سے کہنا شروع کردیا کہ وہ دو بار چیکنگ کرا کر آیا ہے اور وہ فرسٹ کلاس میں سفر کرر رہا ہے۔ امینی کے مطابق یہ سب جانتے ہیں کہ اگر ایک با حجاب مسلمان عورت اس پر شور مچاتی اور احتجاج کرتی تو نہ صرف مجھے گرفتار کرلیاجاتا بلکہ میری فلائٹ بھی چھوٹ جاتی۔ اُس وقت تو مجھے سیکورٹی والوں نے کہا کہ اس معاملے کو ختم کرو اور جب میں جہاز میں سوار ہوئی تو مجھے وہاں سے جانے کے لیے کہہ دیا گیا۔ سوشل میڈیا پر بھی اس واقعے کی وڈیو وائرل ہورہی ہے جس میں جہاز کا عملہ خاتون سے کہہ رہا ہے کہ وہ جہاز سے چلی جائے کیوں کہ اس کی وجہ سے دوسرا مسافر اچھا محسوس نہیں کررہا۔ تاہم خاتون کے انکار کرنے پر پولیس اہل کار جہاز میں داخل ہوئے اور خاتون کو زبردستی اتار کرلے گئے، جہاں اسے کچھ دیر حراست میں رکھنے کے بعد رہا کردیا گیا۔ امریکن اسلامک ریلیشن کونسل نے واقعے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ائرلائن اس واقعے کی وضاحت کرے اور معاملے کی مکمل تحقیقات کی جائیں۔