جماعت اسلامی قومی چارٹر کا جلد اعلان کرے گی، لیاقت بلوچ

32

لاہور(نمائندہ جسارت) نائب امیر جماعت اسلامی اورملی یکجہتی کونسل پاکستان کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے کہا ہے کہ جماعت اسلامی بحرانوں کے خاتمے کے لیے قومی چارٹر کا جلد اعلان کرے گی۔عمران سرکار کی تدبیریں الٹی ہونا شروع ہوگئی ہیں۔اپوزیشن احتجاج کا آئینی و جمہوری حق رکھتی ہے ۔حکومت اس آئینی و جمہوری حق کو چھین رہی ہے ۔حکومت کی الٹی گنتی شروع ہوگئی ہے ۔حالات کو بند گلی میں دھکیلنے کے ذمے دار وزیر اعظم ہیں۔ بحرانوں کا خاتمہ حکومت کی ترجیح ہی نہیں ۔ کھلنڈرے مزاج سیاستدانوں نے سیاسی نظام کا تانا بانا ریزہ ریزہ کردیا ۔جماعت اسلامی نظریاتی سیاست اور عوام کی خدمت کی جدوجہد جاری رکھے گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہور میں کارکنوں کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ لیاقت بلوچ نے جمعیت علما اسلام کے وفد سے ملاقات کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ قومی سیاست میں مولانامفتی محمود ؒ کا کردار علم و عمل اور جدوجہد کا کردار تھا ۔پارلیمانی سیاست کے تحفظ اور اور آمرانہ روش حکمرانی کے خلاف مجاہدانہ کردار ، سیاسی تاریخ کا روشن باب تھے ۔مولانا مفتی محمود ؒ اتحاد امت کے داعی اور مجاہد تحفظ ختم نبوت تھے ۔ مولانامفتی محمودؒ ،مولانا شاہ احمد نورانیؒ ، قاضی حسین احمد ؒ اور مولانا سمیع الحق ؒ جیسے جلیل القدررہنمائوں نے دینی قوتوں کا سر ہمیشہ بلند رکھا ۔مولانامفتی محمود ؒ سیاست میں شائستگی کا استعارہ تھے ۔ لیاقت بلوچ نے بلوچستان قبائلی علاقہ جات کے اضلاع میں دہشت گردی کی شدید مذمت کی اور شہید افسروں اور جوانوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ امریکا بھارت اور اسرائیل کا ناپاک گٹھ جوڑ قومی سلامتی کے لیے خطرہ ہے ۔مقبوضہ کشمیر میں بھارتی اور افغانستان میں امریکی مفادات کے لیے پاکستان میں منظم دہشت گردی ،فرقہ واریت اور فساد پھیلایا جارہا ہے ۔بڑاالمیہ یہ ہے کہ حکومت قومی ترجیحات پر قومی قیادت کو متحد کرنے میں ناکام ہے۔