نیشنل ٹی ٹوئنٹی ، قومی کھلاڑیوں کا شائقین کے نام پیغام

222

نیشنل ٹی ٹونٹ کپ سے قبل قومی کھلاڑیوں نے شائقینِ کرکٹ کے لیے خصوصی پیغامات دیے ہیں۔

کورنا وائرس کی وباء کے باعث کھلاڑیوں، شائقین کرکٹ اور تمام آفیشلز کی صحت اور حفاظت کے پیش نظر نیشنل ٹی ٹونٹی کپ بند دروازوں میں کھیلا جائے گا۔ تیس ستمبر سے اٹھارہ اکتوبر تک کھیلے جانے والے اس ٹورنامنٹ میں پاکستان کے بہترین کھلاڑیوں کےدرمیان سنسنی خیز مقابلے پی ٹی وی اسپورٹس پر براہ راست نشر کیے جائیں گے۔

گزشتہ ہفتے پاکستان کرکٹ بورڈ  نے پی ٹی وی اسپورٹس اور آئی میڈیا کیمونیکشن کے ساتھ تین سالہ معاہدے پر دستخط کیے تھے، جس کے ثمرات تیس ستمبر سے شائقینِ کرکٹ کو اپنی ٹی وی اسکرینز پر نظر آنا شروع ہوجائیں گے۔ اس معاہدے کے تحت ان تین سالوں میں پی سی بی اپنی پراڈکشن خود کرے گا جو پی ٹی وی اسپورٹس سے نشر کی جائے گی۔

بائیوسیکیور ماحول کے باعث بند دروازوں میں کھیلے جانے والے  نیشنل ٹی ٹونٹی کپ میں شریک پاکستان کی وائٹ بال کرکٹ کے کپتان بابراعظم، حیدر علی، حارث رؤف، سرفراز احمد اور شان مسعود کو ابھی سے شائقین کرکٹ کی کمی شدت سے محسوس ہونے لگی  ہے۔

بابراعظم، کپتان پاکستان وائٹ بال کرکٹ:

محدود طرز کی کرکٹ میں پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان بابراعظم کا کہنا ہے کہ کرکٹ تو کھیل ہی فینز کا ہے کیونکہ یہی تو وہ لوگ ہیں جو ہر اچھے اور برے دن میں ہماری حوصلہ افزائی کرتے ہیں، اس مرتبہ بند دروازوں میں کھیلے جانے والے نیشنل ٹی ٹونٹی کپ میں ہمیں شائقین کرکٹ کی کمی شدت سے محسوس ہوگی مگر فینز اپنے پسندیدہ کھلاڑیوں کو اپنے گھروں میں ٹی وی کے سامنے بیٹھ کر بھی دیکھ سکتے ہیں۔

بابر اعظم  نے کہا کہ وہ پی ٹی وی اسپورٹس کو اس کی نشریات کے آغاز سے فالو کررہے ہیں اور اب یہی چینل انہیں سنٹرل پنجاب کی کٹ پہنے میدان میں اترتے ہوئے براہ راست نشر کرے گا، تمام فینز سے درخواست ہے کہ وہ اس مرتبہ اپنے گھروں سے بیٹھ کر اس ٹورنامنٹ کو فالو کریں۔ انہوں  نے مزید کہا کہ اس ایونٹ کی براہ راست نشریات سے جہاں ڈومیسٹک کرکٹ کے معیار میں اضافہ ہوگا تو وہیں پی ٹی وی اسپورٹس کے ناظرین کی تعداد بھی بڑھے گی۔

حیدر علی، ٹی ٹونٹی کرکٹ انٹرنیشنل ڈیبیو پر نصف سنچری بنانے والے پہلے پاکستانی:

اپنے پہلے ٹی ٹونٹی کرکٹ انٹرنیشنل میچ میں نصف سنچری بنانے والے پہلے پاکستانی کرکٹر حیدر علی  نے کہا کہ انہوں نے اپنے لڑکپن میں اپنے دوستوں اور اہلخانہ کے ہمراہ بہت سے میچز اسٹیڈیم جاکر دیکھے لہٰذا انہیں اندازہ ہے کہ اس وقت ایک کرکٹ فین کی کیفیت کیا ہوگی، اسی طرح وہ یہ بھی تسلیم کرتے ہیں کہ انکلوژئیرز میں بیٹھے شائقین کرکٹ کا کھیل میں کتنا اہم کردار ہوتا ہے۔

حیدر علی نے کہا کہ بلاشبہ بند دروازوں کے باعث اس مرتبہ فینز اسٹیڈیم کا رخ نہیں کرسکتے مگر وہ وہاں ہمارے دِلوں میں موجود ہوں گے۔ نوجوان بلے باز  نے  تمام مداحوں سے درخواست کی ہے کہ وہ اس مرتبہ انہیں اور اس ایونٹ میں شریک ہر کھلاڑی کی حوصلہ افزائی کے لیے سوشل میڈیا کا سہارا لیں اور پی ٹی وی اسپورٹس کی براہ راست نشریات کے ذریعے اپنے پسندیدہ کرکٹرز کو ایکشن میں دیکھیں۔

حارث رؤف، نوجوان فاسٹ باؤلر:

اپنی تیز رفتار باؤلنگ سے مداحوں کے دل جیتنے والے حارث رؤف کا کہنا ہے کہ وہ اس مرتبہ اسٹیڈیم میں فینز کی کمی محسوس کریں گے کیونکہ فینز میدان میں موجود ہر کھلاڑی کا حوصلہ بڑھانے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔

انہوں  نے کہا کہ اسٹیڈیم میں بیٹھے شائقین کرکٹ کا شور کسی بھی فاسٹ باؤلر کے جوش میں اضافہ کرتا ہے مگر فینز سے درخواست ہے کہ وہ اس مرتبہ اپنے پسندیدہ کھلاڑیوں کو ایکشن میں دیکھنے کے  لیے پی ٹی وی اسپورٹس لگائیں۔

سرفراز احمد، وکٹ کیپر بیٹسمین:

سابق کپتان اور وکٹ کیپر بیٹسمین سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ نیشنل ٹی ٹونٹی کپ پاکستان کا ایک اہم ٹورنامنٹ اور بند دروازوں کے باعث اس مرتبہ شائقین کرکٹ کا اسٹیڈیم میں داخلہ بند ہوگا تاہم وہ اپنے تمام فینز سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ اس ٹورنامنٹ کو کامیاب بنانے کے لیے گھروں میں ٹی وی اسکرین کے سامنے  بیٹھیں اور پی ٹی وی اسپورٹس پر اپنے فیورٹ کرکٹرز کو کھیلتا دیکھیں۔

انہوں نے کہا کہ وہ خصوصی طور پر اپنی نئی نسل سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ اپنی پڑھائی کے ساتھ ساتھ تیس ستمبر سے ملتان میں شروع ہونے والے ہمارے ٹورنامنٹ کو بھی اسپورٹ کریں ۔

شان مسعود، اوپنر:

سدرن پنجاب کے کپتان شان مسعود کا کہنا ہے کہ پاکستان کی بین الاقوامی کرکٹ وطن واپس آنے کی سب سے زیادہ خوشی بھی یہی تھی  کہ یہاں ہمارے فینز ہمیں اسپورٹ کرنے موجود ہوں گے، جنہوں  نے سری لنکا اور بنگلہ دیش کے خلاف میچوں میں ہمیں بھرپور اسپورٹ بھی کیا مگر بدقستمی سے اس مرتبہ کورونا وائرس کی وباء کے باعث فینز ہمارا ڈومیسٹک ٹورنامنٹ دیکھنے اسٹیڈیم میں نہیں آسکتے۔

شان مسعود نے کہا کہ وہ بھی دیگر کھلاڑیوں کی طرح اسٹیڈیم میں شائقین کی کمی کو شدت سے محسوس کریں گے مگر وہ تمام فینز سے درخواست کرتے ہیں وہ اپنے گھروں کی ٹی وی اسکرین پر پی ٹی وی اسپورٹس لگا کر ہمیں اسپورٹ کریں۔