سرکاری ملازمین ذہنی اذیت کا شکار ہو رہے ہیں،سلطان مجددی

54

لاہور (نمائندہ جسارت) اساتذہ ، ایپکا، سرکاری ملازمین اور پروفیسرز کی تنظیموں پر مشتمل آل گورنمنٹ ایمپلائز گریند الائنس پنجاب کے صوبائی چیئرمین محمد سلطان مجددی ، پروفیسر ندیم اشرفی، رانا لیاقت علی، چودھری محمدسرفراز، امتیاز عباسی، اللہ بخش قیصر، محمد فاضل، وحید مراد یوسفی ، چودھری محمد علی، میاں سرورمعراج، فیض صدیقی، ناصر رحمت، طارق نیازی، چودھری عقیل اورارشد مہر و دیگر نے کہا ہے کہ حکومت مہنگائی کو کنٹرول کرنے میں بالکل ناکام ہوچکی ہے۔سرکاری ملازمین فاقہ کشی اور ذہنی اذیت کا شکار ہو رہے ہیں۔حکومت نے وفاقی بجٹ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ نہ کرکے ملازمین کو زندہ درگور کر دیا ہے۔ ضروریات زندگی کی اشیا کی قیمتیں آسمان کو چھو رہی ہیںجبکہ حکومت نے ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ کرنے کے بجائے پنشن ، گریجویٹی اور سالانہ ترقی کے خاتمے جیسے اقدامات اٹھا کر ملازمین کو سڑکوں پر احتجاج کرنے پر مجبور کر دیا ہے۔ مہنگائی کے ہاتھوں ملازمین کی زندگیاں اجیرن ہیں ۔علاج معالجہ بھی ناممکن ہو چکا ہے۔ پنجاب میں ہزاروں اساتذہ این ٹی ایس ٹیسٹ پاس کرکے بھرتی ہوئے اب انہیں پنجاب پبلک سروس کمیشن کے ذریعے انٹرویو دینے کا کہا جارہا ہے۔دو لاکھ سے زیادہ اساتذہ 18سال سے پے اینڈ سروس پروٹیکشن کے منتظر ہیںانہیں عدالتی فیصلوں کے باوجود پے اینڈ سروس پروٹیکشن کا حق نہیں دیا جارہا۔ہائو س رینٹ دس سال سے منجمد ہے ۔ جب تک ہمارے مطالبات مہنگائی کے تناسب سے ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ، پے سکیل ریوائز، ہائوس رینٹ ، میڈیکل اور کنوینس الائونس میں اضافہ ، پے اینڈ سروس پروٹیکشن ، SSE’s /AEO’s کی غیر مشروط ریگولرائزیشن ، کنٹریکٹ پر بھرتی کا خاتمہ و دیگر تسلیم نہیں کیے جاتے آل گورنمنٹ ایمپلائز گرینڈ الائنس پنجاب اپنا احتجاج جاری رکھے گا۔آج پنجاب بھر کی طرح پنجاب اسمبلی کے سامنے آل گورنمنٹ ایمپلائز گرینڈ الائنس پنجاب کے زیر اہتمام 12بجے دن پُر امن احتجاجی مظاہرہ کیا جائے گااور سرکاری ملازمین اپنے حقوق کے تحفظ کے لیے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے اور اگر حکومت نے اپنی روش نہ بدلی تو ملازمین راست اقدام اٹھانے پر مجبور ہوںگے۔لہٰذا تمام سرکاری ملازمین اپنے حقوق کے تحفظ کے لیے پنجاب اسمبلی کے سامنے احتجاجی مظاہرے میں اپنی شرکت کو یقینی بنائیں۔