ایم کیو ایم اور پیپلز پارٹی کراچی کے مختلف طریقوں سے سودے بازی کررہےہیں ، حافظ نعیم

191

کراچی :امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم  کی ملی بھگت سے کراچی کو لوٹنے کا منصوبہ بنایا جارہا ہے ،پیپلز پارٹی نے سیاسی ایڈمنسٹریٹر قائم کرکے غیر آئینی کام کیا گیا ہے اب کراچی کےمختلف طریقوں سےسودے بازی کر رہے ہیں ۔

دفتر جماعت اسلامی ادارہ نور حق کراچی میں پریس کانفرنس  کرتے ہوئے حافظ نعیم الرحمن کا کہنا تھا کہ الیکشن کی تاریخ کے بعد سیاسی ایڈمنسٹریٹر کا کوئی جواز نہیں بنتا کہ وہ شہر کا ایڈمنسٹریٹر رہے ہم پھر مطالبہ کرتے ہیں کہ اس سیاسی ایڈمنسٹریٹر کو ہٹایا جائے ،ایم کیو ایم نے پہلے گورنر لگوایا اب ایڈمنسٹریٹر لگوانا چاہتے ہیں ،ایڈمنسٹریٹر لگواکر ٹھیکیداروں ودیگر زرائع سے مال بنانا چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کراچی کی مختلف طریقوں سے سودے بازی ہورہی ہے۔ 14 برس میں سندھ حکومت نے کراچی کو کوئی ٹرانسپورٹ منصوبہ نہیں دیا،380بسوں کے روٹ ختم ہوگئے، صرف 80 باقی رہ گئے ہیں، شہر میں تقریباً 45 لاکھ موٹر سائیکلیں ہیں جب کہ شہر میں ٹرانسپورٹ کا کوئی نظام نہیں ہے۔ شہری سفر کے لیے دن بھر دھکے کھاتے پھرتے ہیں، یہاں تک کہ وہ بسوں کی چھتوں پر سفر کرنے پر مجبور ہیں۔

الخدمت کے تحت بنو قابل پروگرام کے ٹیسٹ سے متعلق بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایک لاکھ سے زائد رجسٹریشن ہوئیں،دو حصوں میں پہلے طلبہ اور پھر طالبات کے ٹیسٹ کئے گئے پاس ہونے والوں کو جنوری سے ان کی تعلیم کا سلسلہ شروع ہوجائے گا۔

انہوں نے کہا کہ تعلیم کے بعد انہیں روزگار مل سکے گا روزگار کے لئے مختلف کمپنیوں سے بات چل رہی ہے ،جماعت اسلامی کا میئر آیا تو یہاں آئی ٹی یونیورسٹی کا قیام عمل میں لائیں گے ،میڈیا انڈسٹری سے وابستہ افراد کے بچوں کے لئے الگ ٹیسٹ کا انعقاد کریں گے،بنو قابل پروگرام کے ٹیسٹ کامیابی کے ساتھ کئے گئے ہیں ۔