نیل آرمسٹرانگ اور بزآلڈرِن کے چاند پر قدموں کے نشان53سال بعد بھی واضح

291
footprints

امریکی خلائی ادارے ناسا نے چاند پر پہلا قدم رکھنے والے امریکی خلا باز نیل آرمسٹرانگ اور بز آلڈرِن کے چاند پر قدموں کے نشان کی  ویڈیو جاری کردی، دونوں خلا بازوں کے قدموں کے نشان 53 سال بعد بھی چاند پر حیران کن طور پر واضح ہیں۔

 

ناسا  کی  لونر ریکونائسینس آربِٹر سے بنائی جانے والی ویڈیو میں خلا بازوں کے قدموں کے نشان دِکھائی دیتے ہیں جو ابھی تک وہاں موجود ہیں، ناسا نے لکھا کہ اپولو 11 سب سے زیادہ جانا جانے والا مشن ہے لیکن اس سے قبل بھیجے جانے والے مشنز نے اس مشن کیلیے راہ ہموار کی جن میں روور اور سرویئر جیسے روبوٹِک مشنز سمیت اپولو 8، 9 اور10 کے عملے کے ساتھ بھیجے جانیوالے مشنز شامل ہیں،جن میں چاند کے مدار میں داخلے ہونے اور اس سے خارج ہونے کی آزمائش کی گئی تھی، یہ آربِٹر2009سے چاند کامطالعہ کر رہا ہے اور ایجنسی کے دیگر مشنز کی نسبت بہت زیادہ، 1.4 پِیٹا بائیٹ حجم کا، ڈیٹا زمین پر بھیج چکا ہے،کچھ اندازوں کے مطابق ایک پِیٹا بائیٹ 500ارب معیاری پرنٹڈ صفحات کے برابر ہوتا ہے۔