این سی او سی کا کرونا پابندیاں مزید سخت کرنے کا فیصلہ، تجاویز تیار

192

اسلام آباد: ملک میں کورونا وبا کی تیسری لہر کے باعث کیسز اور اموات میں اضافہ ہورہا ہے، اس صورت حال کے پیش نظر این سی او سی نے پابندیاں سخت کرنے کیلئے تجاویز صوبوں کو بھجوادی ہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق صوبے وفاق کی پابندیوں میں سختی کی تجاویز پر رائے دیں گے، وفاقی حکومت کرونا پابندیوں میں سختی کا اعلان (کل) جمعہ کو کرنے جارہی ہے، ذرائع کے مطابق وفاق کی جانب سے پابندیاں دو فیز میں لگانے کی تجاویز صوبوں کو ارسال کی گئیں ہیں، پہلے فیز میں شام چھ بجے تا سحری تک کاروباری سرگرمیاں بند کرنیکی تجویز دی گئی ہے، پہلے فیز میں پیٹرول پمپس، ویکسین سینٹرز اور فارمیسز کھلی رکھنے کی تجویز بھی دی گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق وفاق نے ہفتہ، اتوار کو کاروباری سرگرمیاں مکمل بند کرنے کی تجویز دی جبکہ پہلے فیز میں ہفتہ اتوار کو ویکسی نیشن سینٹرز کھلے رکھنے کی تجویز بھی سامنے آئی ،ساتھ ہی دفاتر میں نصف عملے کی حاضری کے فیصلے پر سختی سے عملدرآمد کی تجویز دی گئی، دفاتر میں کرونا کیسز رپورٹ ہونے پر متعلقہ وزارت، محکمہ، بینک سربراہ عملدرآمد کے جوابدہ ہونگے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ این سی او سی کی جانب سے صوبوں کو بھجوائی گئی تجاویز میں وفاق کے ماتحت دفاتر کے اوقات کار صبح نو تا دوپہر دو بجے کرنے، جم، ایکسر سائز سینٹرز کی مکمل بندش کی تجاویز دی گئیں ہیں۔ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ فیز ون میں کرونا کے پھیلاؤ میں کمی نہ ہونے کی صورت میں مکمل لاک ڈان کے مشروط نفاذ کی تجویز دی گئی ہیں، ان علاقوں یا شہروں میں مکمل لاک ڈان کیا جائے گا، جہاں کرونا کی مثبت شرح بیس فیصد سے زائد ہوگی، ان علاقوں میں مکمل لاک ڈاؤن کا انعقاد سات تا دس دن تک ہوگا۔