آزادی اقصیٰ کی جنگ جاری رہے گی ، حماس

205
غزہ: اسرائیلی جیلوں میں قید 25 صحافیوں کی رہائی کے لیے ذرائع ابلاغ سے وابستہ افراد، اہل خانہ اور سماجی کارکن احتجاجی مظاہرہ کررہے ہیں

غزہ (انٹرنیشنل ڈیسک) اسلامی تحریک مزاحمت ’’حماس‘‘ نے کہا ہے کہ قابض دشمن کے قبضے سے مسجد اقصیٰ کی آزادی کی جنگ منطقی انجام تک جاری رکھی جائے گی۔ حماس کے ترجمان فوزی برہوم نے ایک بیان میں بیت المقدس کے فلسطینی باشندوں کی قبلہ اول کے دفاع کے لیے قربانیوں اور خدمات کو شاندار خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ بیت المقدس کے فلسطینی باشندے مسجد اقصیٰ کے دفاع میں قابض دشمن کے بدترین تشدد اور اذیتوں کا سامنا کررہے ہیں، مگر دشمن کی تمام ظالمانہ کارروائیوں کے باوجود وہ بیت المقدس اور مسجد اقصیٰ کے دفاع کے مطالبے پر ثابت قدم ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ بیت المقدس کے فلسطینی باشندوں کی خدمات اور ان کی ثابت قدمی پر انہیں خراج تحسین پیش کرنا چاہیے کہ انہوں نے قبلہ اول کے دفاع کے لیے خود کو وقف کررکھا ہے اور وہ قابض دشمن کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر مقدسات کے دفاع کی جنگ لڑرہے ہیں۔ دوسری جانب حماس کے بیرون ملک سربراہ خالد مشعل نے کہا ہے کہ اسرائیلی زندانوں میں پابند سلاسل فلسطینی کا معاملہ پوری فلسطینی قوم کے دل، عقل اور وجدان میں موجود ہے، اور فلسطینی اسیران کی رہائی ہر چیز پر مقدم رہے گی۔ فلسطینی یوم اسیران کے موقع پر ایک ٹی وی پروگرام میں بات کرتے ہوئے خالد مشعل نے کہا کہ ہم اس موقع پر اسیران کو یہ پیغام دینا چاہتے ہیں کہ اسرائیلی جیلوں میں قید آخری فلسطینی کی رہائی تک ہماری کوششیں جاری رہیں گی۔ اس حوالے سے ہم علاقائی اور عالمی فورموں پر بھی آواز بلند کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اسیران کی تکالیف کم کرنے کے لیے ہم تمام تر وسائل کو بروئے کار لائیں گے۔