ایران نے طویل مسافتی فضائی دفاعی نظام تیار کرلیا

198

تہران: ایرانی فوج نے داماوند کے قریب طویل مسافتی فضائی دفاعی نظام کی نقاب کشائی کی۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق دارالحکومت تہران میں منعقدہ ایک فوجی پریڈ کے دوران ایرانی آرمی ڈے کے موقع پر فوج نے درجنوں میزائل سسٹم، جدید اسلحوں اور ڈرونز سسٹمز دکھائے۔

فوج نے بیان جاری کیا جس میں کہا گیا کہ نیا دفاعی نظام مختلف قسم کے طیارے ، بیلسٹک میزائلوں اور کروز کو روکنے اور اسے تباہ کرنے کا اہل ہے۔

دوسری جانب ایرانی صدر حسن روحانی نے بھی اس بات پر زور دیا کہ ملک کے فوجی ادارے بشمول فوج اور انقلابی گارڈز پہلے کے مقابلے میں آج زیادہ پیشہ ور ہیں۔

واضح رہے کہ ایران نے یورینیم افزودگی کی شرح میں بھی مزید اضافہ کررہا ہے کا۔ ایرانی پارلیمان کے ترجمان محمد باقر قالیباف نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ نطنز کی جوہری تنصیب میں کارروائی کے بعد ایران بڑی مقدار میں یورینیم افزودہ کرے گا۔

دوسری جانب سابق امریکی سفارت کارڈینس راس نے کہا ہے کہ تہران حکومت نے جس رفتار سے جوہری سمجھوتے کی خلاف ورزی شروع کررکھی ہے اس کا مقصد امریکی انتظامیہ کو دباؤ میں لانا ہے۔ ایران کو یقین ہے کہ امریکا جوہری سمجھوتے میں تو ضرور واپس آئے گا، اس لیے یہ واپسی کے لیے اپنی شرائط منوانے کے لیے سرگرم ہے۔