پی ٹی آئی حکومت عوام دشمن اور مافیا فرینڈلی ہے، سراج الحق

406

لاہور(نمائندہ جسارت) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ پی ٹی آئی حکومت عوام دشمن اورمافیا فرینڈلی ہے ۔ پاکستان ایک کے بعد ایک بحران کی آماجگاہ بن چکاہے ۔ وزیراعظم نے بیان دیا ہے کہ مہنگائی میں کمی ہوئی ہے ، ہمیں ان کے بیان پر حیرانی نہیں ہوئی ، شاید وہ بنی گالہ کو ہی پورا ملک سمجھتے ہیں ۔ مہنگائی کا جن قابو میں نہ آیا تو بہت جلد حکومت کو کھا جائے گا ۔ وزیراعظم اور ان کی ٹیم زمینی حقائق سے بے خبر ، ٹوئٹر اور ٹیلی فونز کے ذریعے ملک چلانے کی کوشش کر رہی ہے۔ معاشی عدم تحفظ سے اب عوام ذہنی مریض بن چکے ہیں ۔جماعت اسلامی کے جلسوں میں بڑے پیمانے پر عوام کی شرکت حکومت کے خلاف ریفرنڈم ہے ۔ ہم حقیقی اپوزیشن ، حکومت مخالف تحریک میں تیزی لائیں گے ۔ حکومت کو مہنگائی سمیت دیگر ظالمانہ اقدامات واپس لینے ہوں گے ۔کشمیر پر نئی امریکی انتظامیہ سے خیر کی امید عبث ہے۔ ان خیالات کااظہار انہوںنے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے مذہبی امور کے اجلاس میں شرکت کے بعد میڈیا کے نمائندوں اور عوامی وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ حکومت نے آئی ایم ایف کے دبائو پر مسلسل پانچویں دفعہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کر کے ثابت کردیا کہ حکمرانوں کو عالمی مالیاتی اداروں کی تابعداری کے علاوہ کچھ اور نہیں سوجھتا ۔ وزیراعظم کا یہ کہنا کہ مہنگائی کم ہوئی ہے ، قوم کے زخموں پر نمک پاشی ہے ۔انہیں بنی گالہ سے نکل کر غریب عوام کی حالت زار کو دیکھنا چاہیے ۔ آٹا ،چینی ،دال، گھی، کوکنگ آئل کی قیمتیں90 فیصد عوام کی پہنچ میں نہیں ہیں ۔ لوگوں سے روزگار چھن گیاہے ۔ کاروبار بند پڑے ہیں ۔ تاجر، مزدور سب پریشان ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ حالات ایسے ہی رہے تو حکومت کا چلنا مشکل ہو جائے گا ۔غریب عوام حکمرانوں کو گریبانوں سے پکڑنے کے لیے تیار بیٹھے ہیں ۔ قوم کو اپنا بہتر مستقبل نظر نہیں آرہا جس کی وجہ سے وہ ذہنی پریشانی سے دوچار ہیں ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر جل رہاہے مگر ہمارے وزیر خارجہ امید لگائے بیٹھے ہیں کہ امریکا کی نئی انتظامیہ مسئلہ کشمیر کے حل میں مدد دے گی ۔ انہوںنے کہاکہ یہ محض خام خیالی ہے ۔ کشمیریوں کو بھارت کے ظلم و جبر سے نجات دلانے کے لیے حکمرانوں کو ثابت قدمی اور جرأت کا مظاہرہ کرنا پڑے گا ۔انہوںنے کہاکہ حکومت داخلہ و خارجہ دونوں محاذوں پر ناکامی سے دوچار ہے ۔ عوام اس کی پالیسیوں سے نالاں ہیں ۔ جماعت اسلامی کے جلسوں میں لوگ بڑی تعداد میں شرکت کر کے یہ ثابت کررہے ہیں کہ انہیں اب ماضی کے اور موجودہ حکمرانوں سے کوئی امید نہیں ۔ انہوںنے حکمرانوں کو خبر دار کیا کہ وہ یا تو اپنی سمت درست کر لیں اور فوری طور پر مہنگائی و بے روزگاری کے خاتمے کے لیے عملی اقدامات اٹھائیں یا گھر جانے کے لیے تیار ہو جائیں ۔