حکومت اور پی ٹی ایم ایک ہی سکے کے دو رخ ہیں،جاوید قصوری

123

لاہور (وقائع نگار خصوصی) امیر جماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب و صدر ملی یکجہتی کونسل پنجاب وسطی محمد جاوید قصوری نے کہا ہے کہ19 سرکاری اداروں کی نجکاری لاکھوں افراد کو بے روزگار کرنے کے مترادف ہوگا۔ حکومت نجکاری کا سلسلہ روکے۔ اداروں میں موجودہ کرپٹ عناصر کیخلاف کارروائی کرنے کے بجائے نجکاری کا اعلان کردینا مسئلے کا حل نہیں۔سرکاری اداروں کی نجکاری سے ملکی معیشت مزید خراب ہو جائے گئی۔ بے روزگاری اور غربت میں بھی اضافہ ہوگا، ایک کروڑ نوکریاں دینے کا قوم کے ساتھ وعدہ کرنے وا لے عوام سے روزگار چھین رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز مختلف تقریبات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو درپیش مسائل میں اضافہ ہوتا چلا جارہا ہے۔ وزیر اعظم جہاں جاتے ہیں وہاں بڑے بڑے اعلانات تو کردیتے ہیں مگر ان پر عملاً کوئی پیشرفت نہیں ہوتی۔ قوم کو لالی پاپ دینے کا سلسلہ بند ہونا چاہیے۔ بجلی کے نرخوں میں 200 فیصد تک اضافہ ہوچکا ہے۔ گردشی قرضے ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ چکے ہیں۔ اشیا خورونوش عوام کی قوت خرید سے باہر ہوچکی ہیں۔ پاکستان اس وقت بدترین معاشی صورتحال کا شکار ہو چکا ہے۔ ہمارے حکمران سب کچھ جانتے اور دیکھتے ہوئے بھی بے حسی اور سفاکی کا مظاہرہ کررہے ہیں۔ انہیں غریب عوام کی کوئی پرواہ نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں نوجوانوں کی بڑی تعداد حالات سے دلبرداشتہ ہوکر بے راہ روی کا شکار ہورہی ہے۔ سالانہ 40 ہزار نوجوان مختلف اقسام کے نشے کے عادی بن رہے ہیں جو کہ تشویشناک ہے۔ اس حوالے سے حکومت کو ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے اس حوالے سے مزید کہا کہ حکمران جماعت اور پی ڈی ایم ایک ہی سکے کے دو رخ ہیں۔ دونوں کو ہی عوام کی کوئی فکر نہیں۔ آج ملک و قوم جن گمبھیر مسائل سے دوچار ہیں وہ ماضی کے حکمرانوں کے ہی پیدا کردہ ہیں۔