قتل کے الزام میں گرفتار ملزم 12 سال بعد بری

141

سپریم کورٹ نے قتل کے الزام میں قید ملزم کو 12 سال بعد بری کردیا۔

جسٹس منظور ملک کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی۔وکیل درخواست گزار نے موقف اپنایا کہ رات ڈیڑھ بجے گلی میں معمولی تنازع پرجھگڑا ہوا،قتل کا مقدمہ7 ملزمان کے خلاف درج ہوا، عدالتوں سے تمام شریک ملزمان بری ہوچکے۔

جسٹس منظور ملک نے کہا کہ رکارڈ کےمطابق فائرنگ بری ہونےوالے ملزمان نے بھی کی تھی،  رات کے اندھیرے میں کیا معلوم کس کی گولی سے بندا قتل ہوا۔

عدالت نے ملزم یاسین کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے بری کر دیا۔ ٹرائل کورٹ نے ملزم کوسزائے موت دی، ہائیکورٹ نے عمرقید میں تبدیل کردیا۔ملزم محمد یاسین 2008 سے اوکاڑہ جیل میں قید تھا۔