مقبوضہ کشمیر، بھارتی فوج نے 3 سالہ بچے کے سامنے دادا کو شہید کردیا

615

سری نگر: بھارتی فورسز  نے مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشت گردی کے تازہ واقعہ میں 3 سالہ بچے کے سامنے دادا کو شہید کردیا جس کے بعد گزشتہ ایک ماہ کے دوران بھارتی فوج کے ہاتھوں شہید ہونے والے کشمیریوں کی تعداد 54 ہوگئی ہے۔

عالمی انسانی حقوق کی تنظیمیں، اقوام متحدہ سمیت دیگر انسانی حقوق کے ترجمان بھارت کی مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشت گردی پر خاموش تماشائی  بنے ہوئے ہیں ۔

 گزشتہ روز مقبوضہ وادی میں بھارتی فوج نے 3 سالہ بچے کے سامنے دادا کو گولی مار کرشہید کردیا، شہید ہونے والے بشیر احمد کے بیٹے کا کہنا ہے کہ والد کو گاڑی سے  اتار کرگولیوں کا نشانہ بنایا گیا جبکہ شہید بشیر احمد کی لاش پر بیٹھے 3 سالہ بچے کی تصویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی ہے۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق  گزشتہ ماہ جون میں بھارتی فوج نے 567 سرچ آپریشن کیے جس میں  54 کشمیریوں کوشہید کیا گیا، 29 زخمی ہوئے،82 کشمیری گرفتار کیے گئے جبکہ 3 خواتین کے ساتھ بدسلوکی کی گئی ۔

واضح رہے کہ بھارتی فوج نے گزشتہ ماہ جون میں  2 نوعمر لڑکوں بھی شہید کیا جبکہ قابض فوج نے کوروناوائرس اور 11 ماہ کے طویل لاک ڈاؤن میں 200 سے زائد کشمیریوں کو شہید کیا گیا۔