پاکستان سعودی عرب کے ساتھ کھڑا ہے،وزیراعظم کا علی عہد کو فون

44

اسلام آباد (اے پی پی) وزیراعظم عمران خان نے سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان کو ٹیلی فون کیا اور سعودی تیل تنصیبات اور آئل فیلڈ پر ڈرون حملے کی پرزور مذمت کی جس سے مادی نقصان پہنچا اور کام میں خلل پیدا ہوا۔ وزیراعظم نے اس قسم کے حملوں کے ذریعے خطے میں موجود پرامن ماحول کو خراب کرنے کی کوششوں پر گہری تشویش کا اظہار کیا۔ وزیراعظم نے سعودی عرب کے برادر عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے سعودی عرب کی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کے لیے پاکستان کی حمایت کا اعادہ کیا۔ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے چین کے ساتھ تعاون پر مبنی سدا بہار تزویراتی شراکت داری کو مزید تقویت دینے کے لیے پاکستان کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا ہے کہ پاک۔چین اقتصادی راہداری کو اولین ترجیح دی جا رہی ہے۔ انہوں نے یہ بات پاکستان میں چین کے سفیر یائو جنگ سے گفتگو کرتے ہوئے کہی جنہوں نے منگل کو ان سے ملاقات کی۔ چینی سفیر نے وزیراعظم کو ان کی آئندہ سالگرہ پر صدر شی جن پنگ کی جانب سے نیک خواہشات کا پیغام پہنچایا۔ چینی صدر کے پیغام میں پاکستان اور چین کے درمیان روایتی دوستی کو چٹان کی طرح مضبوط قرار دیتے ہوئے نئے دور میں مشترکہ مستقبل کی حامل قریبی پاک۔چین برادری کو مستحکم بنانے کے عزم کا اعادہ کیا گیا۔ وزیراعظم نے چینی صدر کا شکریہ ادا کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے سی پیک کے تحت جاری منصوبوں کی تکمیل کے لیے پاکستان کے عزم کو بھی دہرایا جو پاکستان کی ترقی و خوشحالی میں بہت زیادہ معاون ہے۔