ورلڈ کپ، پاکستان نے افغانستان کو 3 وکٹوں سے شکست دیدی

449
انگلینڈ میں جاری کرکٹ ورلڈکپ 2019ء کے دوران پاکستان اور افغانستان کے مابین کھیلے گئے کانٹے دارمقابلے کے مختلف مناظر ،پاکستان کرکٹ ٹیم نے سخت مقابلے کے بعد افغانستان کرکٹ ٹیم کو شکست سے دو چار کر کے سیمی فائنل تک اپنی رسائی کو قریب کرلیا ہے،میچ کے دوران پاکستانی شائقین کرکٹ کا جوش و خروش واضح طور پرنمایاں ہے جبکہ آخری تصاویر میں شائقین پاکستان کی جیت کی خوشی منا رہے ہیں
انگلینڈ میں جاری کرکٹ ورلڈکپ 2019ء کے دوران پاکستان اور افغانستان کے مابین کھیلے گئے کانٹے دارمقابلے کے مختلف مناظر ،پاکستان کرکٹ ٹیم نے سخت مقابلے کے بعد افغانستان کرکٹ ٹیم کو شکست سے دو چار کر کے سیمی فائنل تک اپنی رسائی کو قریب کرلیا ہے،میچ کے دوران پاکستانی شائقین کرکٹ کا جوش و خروش واضح طور پرنمایاں ہے جبکہ آخری تصاویر میں شائقین پاکستان کی جیت کی خوشی منا رہے ہیں

 

لیڈز: افغانستان کے کھلاڑی پاکستانی بلے باز امام الحق کو آئوٹ کرنے کے بعد خوشی کا اظہار کررہے ہیں
لیڈز: افغانستان کے کھلاڑی پاکستانی بلے باز امام الحق کو آئوٹ کرنے کے بعد خوشی کا اظہار کررہے ہیں

لیڈز(جسارت نیوز) پاکستان نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد افغانستان کو 3 وکٹوں سے شکست دے کر سیمی فائنل میں رسائی کے لیے پیش قدمی کو برقرار رکھا ۔لیڈز میں کھیلے گئے میچ میں قومی ٹیم نے افغانستان کا 228 رنز کا ہدف عماد وسیم کے 49 رنز کی بدولت اآخری اوور میں حاصل کرلیا، شاندار بیٹنگ سے ٹیم کو فتح سے ہمکنار کرنے پر عماد وسیم کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔ اس کامیابی کے ساتھ گرین شرٹس 9 پوائنٹس کے بعد پوائنٹس ٹیبل پر چوتھے نمبر پر اآگئی ہے۔قومی ٹیم کی سیمی فائنل میں رسائی کے لیے بنگلادیش سے میچ میں فتح اور انگلینڈ کی بھارت سے ہار درکار ہے۔ہدف کے جواب میں قومی ٹیم کی جانب سے فخرزمان اننگز کی دوسری ہی گیند پر کھاتہ کھولے بغیر پویلین واپس لوٹ گئے تاہم بابراعظم اور امام الحق نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کرتے ہوئے اسکور بورڈ کو آگے بڑھایا۔امام الحق محمد نبی کو آگے بڑھ کر کھیلنے کے چکر میں وکٹ گنوا بیٹھے، وہ 36 رنز بناکر آؤٹ ہوئے اور محمد نبی نے اگلے ہی اوور میں بابر اعظم کو بھی 45 رنز پر بولڈ کردیا جب کہ اآئوٹ آف فام محمد حفیظ ایک مرتبہ پھر ناکام رہے اور 19 رنز بنا کر چلتے بنے۔پاکستان کی 5 ویں وکٹ 142 رنز پر حارث سہیل کی صورت میں گری جو 27 رنز بنا کر ایلبی ڈبلیو ہو گئے جب کہ کپتان سرفراز احمد 18 رنز بنا کر رنآؤٹ ہوئے۔چھٹی وکٹ پر شاداب خان اور عماد وسیم کے مابین 50 رنز کی قیمتی پارٹنرشپ قائم ہوئی تاہم شاداب 206 کے مجموعے پر رن آئوٹ ہوگئے جس کے بعد وہاب ریاض نے عماد وسیم کا بھرپور ساتھ دیا اور 15 رنز کی اہم اننگز کھیلتے ہوئے ٹیم کی کامیابی میں بھرپور حصہ ڈالا۔افغانستان کی جانب سے مجیب الرحمان اور محمد نبی نے 2،2 جب کہ راشد خان نے ایک وکٹ حاصل کی۔کامیابی کے بعد فاتح ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ عماد وسیم نے بہترین اننگ کھیلی، افغان بالرز نے کنڈیشنز کا بہترین استعمال کیا امام اور بابر نے شروع میں اچھی بیٹنگ کی،شاہین آفریدی سمیت تمام بولرز نے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔انہوں نے مزید کہا کہ بھارت اور انگلینڈ کا میچ صرف دیکھیں گے جب کہ تیاری اگلے میچ کی کریں گے۔افغان کرکٹ ٹیم کے کپتان نے کہا کہ پورے ایونٹ میں ہماری بیٹنگ اچھی نہیں تھی جبکہ حامد حسن کا انجرڈ ہونا ہماری بدقسمتی ثابت ہوئی،ہم بہت اچھا کھیلے لیکن جیت نہ سکے، پاکستان نے آخری موقع پر اعصاب پر قابو رکھا اور فتح حاصل کی۔اس سے قبل افغان ٹیم کے کپتان گل بدین نائب نے ٹاس جیت کر پہلے خود بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا تو گل بدین نائب اور رحمت شاہ نے اننگز کا آغاز کیا لیکن شاہین شاہ آفریدی نے 5ویں اوور میں گل بدین کو 15 رنز پر پویلین بھیج دیا اور اگلی ہی گیند پر ہشمت اللہ شہیدی کو بھی کھاتہ کھولے بغیر پویلین واپس بھیج دیا۔رحمت شاہ اور اصغر افغان نے پاکستانی بولرز کو خوب پریشان کیا، رحمت 43 گیندوں پر 35 اور اصغر افغان 35 گیندوں پر 42 رنز کی اننگز کھیل کر آؤٹ ہوئے جب کہ وکٹ کیپر بیٹسمین اکرام اللہ 24 رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہوئے، محمد نبی صرف 16 رنز ہی بناسکے اور راشد خان 8 رنز کے مہمان ثابت ہوئے۔قومی ٹیم کی جانب سے شاہین آفریدی نے 4 ، عماد وسیم اور وہاب ریاض نے 2،2 جب کہ شاداب خان نے ایک وکٹ حاصل کی۔میچ کے بعد افغانی تماشائی گرائونڈ میں داخل ہوگئے اور قومی ٹیم کے وہاب ریاض اور دیگر کو تشدد کا نشانہ بنانے کی کوشش کی جس کو سیکورٹی اہلکاروں نے ناکام بناتے ہوئے افغانی تماشائیوں جو گرائونڈ کے اندر آگئے تھے حراست میں لے لیا۔