افغانستان کو بعض اشیا پاکستانی کرنسی میں برآمد کی جائیگی،ای سی سی

182

اسلام آباد (اے پی پی+ مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر خزانہ شوکت ترین کی سربراہی میں اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) کا اجلاس ہوا جس میں افغانستان کے لیے چینی، چاول، مچھلی اور گوشت سمیت مخصوص اشیاء پاکستانی کرنسی میں برآمد کرنے کی اجازت دے دی گئی۔اجلاس میں افغانستان سے چلغوزے کی درآمد پر 45 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی بھی ختم کردی گئی ہے۔اجلاس کے اعلامیے کے مطابق برآمد کی جانے والی اشیاء میں پھل، سبزیاں، سیمنٹ، نمک اور خشک میوہ جات بھی شامل ہیں۔ اس کے علاوہ حملے میں ہلاک ہونے والے داسو پن بجلی منصوبے کے چینی ملازمین کے لیے 11 کروڑ 6 لاکھ ڈالر ادائیگی کی بھی منظوری دی گئی جبکہ یوریا کھاد فیکٹریوں کو مارچ تک 839 روپے فی ایم ایم بی ٹی یوکے حساب گیس فراہم کرنے کی منظوری دی گئی۔اعلامیے کے مطابق فائیو جی اسپیکٹرم جاری کرنے کے لیے وزیرخزانہ کی صدارت میں مشاورتی کمیٹی قائم کرنے کی
منظوری دی گئی، ایف بی آر کے لیے 4 ارب اور مردم شماری کے لیے وزارت پلاننگ کو 5 ارب روپے کی تکنیکی گرانٹ کی منظوری بھی دی گئی۔اس کے علاوہ کووڈ ویکسین کی خریداری کے لیے 11 ارب 96 کروڑ روپے جاری کرنے کی منظوری بھی اجلاس میں دی گئی۔