کے الیکٹرک کو میونسپل ٹیکس جمع کرنے کی اجازت دی جائے،سندھ حکومت کا نیپرا کو خط

119

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ حکومت نے نیپرا کو خط ارسال کیا، جس میں کے الیکٹرک کو میونسپل ٹیکس جمع کرنے کی اجازت کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ سندھ حکومت کی جانب سے نیپرا کو ارسال کیے جانے والے خط میں نیپرا سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ کے الیکٹرک کو میونسپل ٹیکس جمع کرنے کی اجازت دی جائے۔ خط میں کہا گیا ہے کہ نیپرا کے الیکٹرک کو ماہانہ بل میں میونسپل ٹیکس شامل کرنیکی اجازت دے، بلدیہ عظمیٰ کراچی مالی بحران کا شکار ہے، اسے ٹیکس جمع کرنے میں مشکلات ہیں۔خط میں کہا گیا ہے کہ میونسپل ٹیکس کی بہتر وصولی کے لیے کے الیکٹرک کی خدمات درکارہیں، کے الیکٹرک نے میونسپل ٹیکس جمع کرنے کے لیے مشروط آمادگی ظاہرکی ہے۔ اگر نیپرا کی جانب سے کے الیکٹرک کو اجازت دے دی جاتی ہے تو ماہانہ بل میں میونسپل ٹیکس کو شامل کرلیا جائے گا۔ محکمہ توانائی سندھ نے نیپرا سے کے الیکٹرک کو جلد از جلد اجازت دینے کا مطالبہ بھی کیا ہے۔ یاد رہے کہ10 ستمبر کو وزیراعلیٰ سندھ کی زیرصدارت اجلاس ہوا تھا، جس میں ایڈمنسٹریٹر کراچی، متعلقہ محکموں کے حکام اور کے الیکٹرک کا وفد شریک ہوا، اجلاس میں میونسپل کارپوریشن کے واجبات کی ادائیگی کے حوالے سے بات چیت کی گئی۔ اجلاس میں سفارش کی گئی کہ کے الیکٹرک شہریوں سے کنزر کنزروینسی ٹیکس بل میں شامل کر کے وصول کرے۔ اجلاس میں کے ایم سی اور ڈی ایم سی ٹیکس عوام سے بجلی کے بلوں کے ذریعے وصول کرنے کی تجویز پیش کی گئی۔ ذرائع کے مطابق 25 لاکھ صارفین سے فائر اور کنزروینسی ٹیکس کی مد میں رقم وصول کی جائے گی۔ اگر کے الیکٹرک اور سندھ حکومت کے درمیان معاہدہ طے ہوگیا تو کراچی میونسپل کارپوریشن (کے ایم سی)کو سالانہ 9 ارب روپے کی آمدنی ہو گی۔دوسری جانب ایم کیو ایم پاکستان اور وفاقی حکومت کے نمائندے اسد عمر نے کنروینسی ٹیکس کے الیکٹرک بلوں کے ذریعے وصول کرنے کی تجویز کو مسترد کردیا تھا۔ اسد عمر کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت کو کے الیکٹرک بل کے ذریعے ٹیکس جمع کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔