دھرما سینا نے ورلڈکپ فائنل میں اضافی رنز دینے کی غلطی تسلیم کرلی

92

کولمبو (جسارت نیوز) سری لنکن امپائر کمار دھرما سینا نے انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے درمیان کھیلے گئے ورلڈ کپ فائنل میں اوور تھرو پر میزبان ٹیم کو 6 رنز دینے پر اپنی غلطی کا اعتراف کر لیا اور کہا کہ میدان میں ری پلے کی سہولت نہیں ہوتی، میں نے لیگ امپائر ماریس ایراسمس سے مشاورت کے بعد چھ رنز دیے تھے اسلئے مجھے اپنے فیصلے پر کوئی پچھتاوا نہیں ہے اور انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے بھی اس وقت میرے فیصلے کی تعریف کی تھی۔ 14 جولائی کو انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے درمیان کھیلے گئے ورلڈ کپ فائنل میچ کے آخری اوور میں کیوی فیلڈر مارٹن گپٹل کی پھنیکی گئی تھرو انگلش بلے باز بین اسٹوکس سے ٹکرا کر باؤنڈری لائن پار کر گئی تھی جس پر دھرما سینا نے میزبان ٹیم کو 6 رنز دیے تھے، میچ ٹائی ہونے کے بعد سپر اوور میں بھی دونوں ٹیموں کے درمیان میچ برابر رہا تاہم انگلش ٹیم کو زیادہ بائونڈریز کی بنیاد پر فاتح قرار دیا گیا تھا۔ آسٹریلیا اور انگلینڈ کے درمیان کھیلے گئے ورلڈ کپ سیمی فائنل میچ میں جیسن روئے کو غلط کیچ آئوٹ دیے جانے پر دھرماسینا کو کڑی تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا تاہم انہوں نے انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کے درمیان ورلڈ کپ فائنل میں بھی غلط فیصلے دیے، اوور تھرو پر انگلش ٹیم کو 5 کے بجائے 6 رنز دینے پر بھی ان کے فیصلے کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا گیا اور کرکٹ حلقوں میں تاحال اس پر بحث جاری ہے۔ سابق آسٹریلوی امپائر سائمن ٹوفل نے سب سے پہلے دھرما سینا کے فیصلے کو غلط قرار دیا تھا۔ سری لنکن امپائر دھرما سینا نے بھی بالاآخر خاموشی توڑ دی اور اپنی غلطی کا اعتراف کر لیا۔ انہوں نے کہا کہ ٹی وی ری پلیز دیکھنے کے بعد میں مانتا ہوں کہ فیصلے کی غلطی تھی لیکن میدان میں ری پلے کی سہولت نہیں ہوتی، میں نے لیگ امپائر ایراسمس سے مشاورت کے بعد انگلش ٹیم کو 6 رنز دیے تھے اسلئے مجھے اپنے فیصلے پر کوئی پچتھاوا نہیں، ایسا کوئی قانون بھی نہیں کہ میں اسے تھرڈ امپائر کو ریفر کرتا کیونکہ کوئی رن آئوٹ واقع نہیں ہوا تھا، میں نے کمیونیکیشن سسٹم پر ایراسمس سے مشاورت کی، دیگر امپائرز اور میچ ریفری نے بھی ہماری گفتگو سنی لیکن انہوں نے ٹی وی ری پلے نہیں لیا اور انہوں نے بھی بیٹسمین کے رن مکمل ہونے کی تصدیق کی تھی جس کے بعد میں نے 6 رنز دینے کا فیصلہ کیا تھا۔