نیب کا رکن قومی اسمبلی ناصر اور امداد بوسال کو گرفتار کرنیکا فیصلہ

64

اسلام آباد(آن لائن) نیب نے مسلم لیگ ن کے رکن قومی اسمبلی ناصر بوسال اور ان کے بھائی امداد بوسال کو گرفتار کرنے کا فیصلہ کرلیا، امداد بوسال سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے پرسنل سیکرٹری تھے ، وہ شہباز خاندان کی کرپشن کے عینی گواہ بھی ہیں،انہوں نے شہباز سے بھاری فنڈز ریلیز کرائے تھے جو غبن اور بدیانتی کی نظر ہو گئے ہیں۔ رکن قومی اسمبلی ناصر بوسال نے سڑکوں کی تعمیر اور منڈی بہاالدین میں سیوریج کے منصوبہ میں قومی فنڈز میں ہیرپھیر کر رکھی ہے۔ نیب نے دونوں بھائیوں کیخلاف کرپشن تحقیقات کی منظوری اپنے ایگزیکٹو بورڈ میں دی تھی جس کے بعد اب تک اہم انکشاف سامنے آئے ہیں ابتدائی تحقیقات کے مطابق ناصر نے علاقے میں جو سڑکیں، نالیاں، سیوریج کے منصوبے لے رکھے تھے ان میں میٹریل بھی ناقص استعمال ہوا اتھا جبکہ ادائیگیاں بھی قواعد کے برعکس تھیں، نیب حکام نے فنڈز وصول کرنے والے منڈی بہاالدین کے درجنوں ٹھیکہ داروں کو بھی گرفتار کرنے کا ارادہ کیا ہے، بوسال برادرز کی کرپشن اور بدیانتی کا اسکینڈل ضلع میں گوندل برادرز کی کرپشن سے بھی بڑا سامنے آیا ہے ۔گوندل برادران نذر گوندل اور ظفر گوندل نے 20ارب کی کرپشن پیپلزپارٹی کے دور میں کی تھی جبکہ ظفر گوندل اب عدالتوں میں کرپشن مقدمات کا سامنا کررہے ہیں۔
نیب کا رکن