ظہیر خان

1 مراسلات 0 تبصرے

’’دیکھنا اک دن عنایتؔ جا بسے گا زِیرخاک‘‘

دل یہ کہتا ہے کہ تو مظرابِ سازِ زیست ہے چل بسا تو سازِ ہستی بے صدا ہو جائے گا کیسے کیسے لوگ خاموشی سے اٹھ...
پرنٹ ورژن
Friday magazine