چالباز مودی سرکار کا ریٹائرڈ بھارتی فوجیوں سے بھی دھوکا

205

نئی دہلی:چالباز مودی سرکار نے ریٹائرڈ بھارتی فوجیوں کو بھی دھوکا دے دیا، مودی نے الیکشن سے قبل ووٹ بٹورنے کی خاطر ایک رینک، ایک پنشن کا وعدہ کیا، بعد میں آنکھیں پھیر لیں، 2008 سے ریٹائرڈ بھارتی فوجی ایک رینک، ایک پنشن کیلئے احتجاج کر رہے ہیں۔

سال 2013 میں ہریانہ میں انتخابی ریلی کے دوران مودی نے ایک رینک، ایک پنشن کا وعدہ کیا تھا، سیاچن میں فوجیوں سے خطاب میں مودی نے ایک رینک، ایک پنشن کی منظوری کا دوبارہ وعدہ کیا، مودی کے وعدے پر جنرل وی کے سنگھ سمیت کئی ریٹائرڈ جرنیلوں اور ہزاروں ریٹائرڈ فوجیوں نے بی جے پی کو ووٹ ڈالا۔

انتخابات جیتنے کے بعد احسان فراموش مودی سرکار ٹال مٹول سے کام لینے لگی، مطالبات کی نا منظوری پر جون 2015 میں ریٹائرڈ فوجیوں نے ہندوستان بھر میں مظاہرے شروع کر دیے، مظاہروں کے دوران پولیس نے دہلی میں احتجاج کرنے والے ریٹائرڈ فوجیوں اور بیواں پر بہیمانہ تشدد کیا۔ 

مظاہرین پر تشدد کی وجہ سے 10 سابقہ آرمی چیفز نے مودی کو خط میں مذمت کی اورتحقیقاتی کمیشن کا مطالبہ کیا،یکم نومبر2016 کو صوبیدار رام کشن نے مطالبات کی نامنظوری پرخودکشی کر لی تھی جبکہ 5ہزار سے زائد ریٹائرڈ بھارتی فوجی مودی سرکار کو احتجاج کے طور پر اپنے تمغے واپس کر چکے ہیں۔

سپریم کورٹ کے واضح احکامات کے باوجود مودی سرکار نے زور زبردستی ترمیم یافتہ بل منظور کر لیا،ریٹائرڈ فوجیوں نے بل کو مسترد کرتے ہوئے اسے ایک رینک پانچ کے مترادف پنشن قرار دیا تھا،مودی سرکار کے مطابق بل کی منظوری سے 40فیصد دفاعی بجٹ صرف پنشنز کی نذر ہو جائے گا۔