حکومت میں رہ کر جتنا سیاسی نقصان ہونا تھا ہو گیا، اب کچھ نہیں ہو گا،رانا ثنا

256
four bullets

اسلام آباد: وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنااللہ نے کہا ہے کہ ہمیں حکومت میں رہ کر جتنا سیاسی نقصان ہونا تھا ہو گیا ہے اب اور کچھ نہیں ہو گا۔

نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عمران خان مذاکرات کرنا چاہتے ہیں تو آئیں ہم بات کرنے کو تیار ہیں،جنرل ریٹائرڈ قمر جاوید باجوہ سے متعلق پرویز الٰہی اور مونس الٰہی کے بیانات غلط ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مونس الٰہی نے جنرل باجوہ کے سامنے تمہید باندھی ہوگی، جس کی انہوں نے تائید کردی ہوگی۔

وفاقی وزیر نے تحریک عدم اعتماد سے پہلے نئے ڈی جی آئی ایس آئی اور پی ٹی آئی کے ناراض اتحادیوں سے ملاقات کی تفصیلات بھی بتا دیں۔راناثنا نے کہا کہ اگر یہ صوبائی اسمبلیاں توڑ دیں گے تو ہم الیکشن لڑنے کے لیے تیار ہیں۔ اگر عمران خان نے مذاکرات کرنے ہیں تو سیدھے طریقے سے کان پکڑیں۔

انہوں نے کہا کہ 26 نومبر کو بھی کہا تھا کہ الیکشن کی تاریخ پنڈی سے نہیں ملے گی،الیکشن کے لیے سیاستدانوں سے رابطہ کرنا چاہیے، اب بھی کہتا ہوں کہ عمران خان مذاکرات کرنا چاہتے ہیں تو آئیں ہم بات کرنے کو تیار ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں حکومت میں رہ کر جتنا سیاسی نقصان ہونا تھا ہو گیا ہے اب اور کچھ نہیں ہو گا۔ تحریک انصاف کو جنرل باجوہ کے خلاف باتیں کرنا ان کی ریٹائرمنٹ کے بعد ہی کیوں یاد آئیں، اگر وہ اتنے ہی برے تھے تو ان کے ہوتے ہوئے ان کے خلاف باتیں کیوں نہیں کرتے تھے۔