روسی تیل 60 ڈالر فی بیرل مقرر،فیصلے پر عمل شروع

274

ماسکو:یورپی یونین  ممالک کی جانب سے روس سے سمندری راستے تیل کی درآمد پر پابندی اور 60ڈالر فی بیرل کی حد مقرر  کرنے کے فیصلے پرعمل درآمد  شروع کر دیا گیا،

یورپی یونین ممالک  کی جانب سے  ماہ جون میں قبول کردہ، روس سے سمندری راستے سے تیل کی درآمد پر پابندی پر مشتمل چھٹاپیکیج   ٹرانزٹ مدت کے خاتمے کے  بعد 6 دسمبرسے نافذ العمل ہوا ہے،یورپی یونین کے رکن ممالک نے تیل پر پابندی پر  جامع  مذاکرات کئے۔

یورپی یونین کے ممالک اتفاق رائے تک پہنچنے میں کامیاب ہو گئے، تازہ ترین پیکج میں روس سے ٹینکروں کے ذریعے تیل کی خریداری اور پائپ لائنوں کو پابندیوں سے خارج کرنے کے لیے نظر ثانی کی گئی،یورپی یونین کے ممالک نے معاہدے تک پہنچنے کے لیے روس سے تیل  کی ترسیل ہونے  والی ڈرزبا پائپ لائن کو پابندیوں سے مستثنی قرار دے دیا۔