تیل معاہدے کیلیے حکومتی ٹیم روس جائے گی، اسحاق ڈار

250
more time

اسلام آباد: وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا کہنا ہے کہ پاکستان کا ایک وفد پیر کو روس روانہ ہوگا تاکہ ایندھن کی دولت سے مالا مال ملک کے ساتھ ممکنہ تیل کے معاہدے پر بات چیت کی جا سکے۔

نجی ٹی وی  کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ اسحاق ڈار نے کہا کہ حکومت نے وزارت پیٹرولیم کو اختیار دے دیا ہے اور پیر کو ہماری ٹیم مذاکرات کے لیے روس روانہ ہوگی۔ میری وزیر پٹرولیم سے ملاقات ہوئی اور انہوں نے مجھے ڈیویلپمنٹ کی تصدیق کی ہے۔

میزبان نے اسحاق ڈار سے ان کے اس اعلان کے حوالے پوچھا کہ وہ بین الاقوامی مارکیٹ میں تیل کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے درمیان روس سے سستا ایندھن حاصل کریں گے؟تو جواب میں وزیر خزانہ نے کہا کہ ہمیں دعا کرنی چاہیے یہ دورہ کامیاب ہو اور حکومت عوام کے لیے سازگار شرائط و ضوابط پر معاہدہ کرنے کا انتظام کرے۔

خیال رہے کہ بنیادی اشیاء کی قیمتوں کے تعین میں تیل کی قیمتیں ایک اہم عنصر ہیں۔ پاکستان نے اکتوبر میں امریکی محکمہ خارجہ کے نمائندوں سے ملاقات کی تھی، جس میں دونوں فریقین نے روسی تیل پر تفصیلی بات چیت کی تھی۔

اسحاق ڈار کے مطابق، واشنگٹن نے کریملن سے ایندھن خریدنے کی ان کی تجویز سے اتفاق کیا کیونکہ انہیں اس میں کوئی مسئلہ نہیں تھالیکن، انہوں نے کہا تھا کہ ایک G7 قیمتوں کا تعین کرنے والی کمیٹی تشکیل دی جائے گی جو اوپری کیپ یعنی ایندھن خریدنے کی ایک حد کا تعین کرے گی، جو اب تشکیل دی گئی ہے۔