حکومت سود کیخلاف قانون سازی کا روڈ میپ دے، اسد اللہ بھٹو

128
road map

کراچی: ملی یکجہتی کونسل سندھ کے صدر و سابق رکن قومی اسمبلی پاکستان اسد اللہ بھٹو نے کہا ہے کہ اسٹیٹ بینک اور نیشنل بینک کی طرح دیگر پرائیویٹ بنکوں سے بھی سپریم کورٹ میں سودی نظام کے حق میں دائر اپیلیں واپس کروائے  اور فوری طور پر سودی نظام کے خاتمے اور اس حوالے سے قانون سازی کا روڈ میپ دے۔

اسد اللہ بھٹو کی زیر صدارت ادارہ نور حق میں صوبائی کونسل کے عہدیداران اور کونسل میں شریک پارٹیوں کے نمائندوں کا اجلاس ہوا ۔ اجلاس میں جماعت اسلامی کی جانب سے جمعہ 25نومبر کو ”یوم انسدادِ سود”کا بھر پور خیر مقدم کرتے ہوئے اس کی مکمل حمایت کا اعلان کیا۔ اجلاس میں جوائے لینڈ نامی فلم کو نمائش کے لیے پیش کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے سندھ حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ پنجاب کی طرح صوبہ سندھ میں بھی اس پر پابندی عائد کی جائے کیونکہ یہ اسلامی اقدارو روایات اور ہماری تہذیب و ثقافت کے خلاف اور عالمی ایجنڈے کو آگے بڑھانے کا حصہ ہے جسے کسی صورت میں بھی قبول نہیں کیا جاسکتا۔

اجلاس میں علمائے کرام سے اپیل کی گئی کہ وہ خطبات جمعہ میں انسداد ِ سود اور اس کے خلاف عوام کے اندر آگاہی پیدا کریں ۔ ہمارا دین ٹرانس جینڈر کو مکمل حقوق اور تحفظ فراہم کرتا ہے لیکن ان کے حقوق کی آڑمیں جو سازش کی جارہی ہے ہم اس کے خلاف ہیں ۔ اجلاس میں طے کیا گیا کہ اگر اس فلم پر پابندی نہ لگائی گئی تو علمائے کرام بھر پور احتجاج کریں گے۔اس مسئلے کو سندھ اسمبلی کے اندر بھی اُٹھایا جائے گا اور گورنر سندھ سے ملاقات کر کے بھی فلم پر پابندی لگوانے کی بات کی جائے گی۔

اجلاس میں سندھ حکومت کی جانب سے سرکاری تعلیمی اداروں میں رقص اور موسیقی کی کلاسیں شروع کرنے اور ان کے لیے اساتذہ کی بھرتی کی بھی شدید مذمت کی گئی اور مطالبہ کیا کہ سندھ حکومت اپنے اس فیصلے کو واپس لے ۔ اجلاس میں نکاح نامے میں ختم نبوت ۖکے حلف نامے کو لازمی قرار دینے اور اسکولوں میں قرآن مجید کی تعلیم ترجمے کے ساتھ دینے کی تجاویر کا بھر پور خیر مقدم کیا گیا اور کہا گیا کہ اس پر فی الفور عملدر آمد یقینی بنایا جائے اور جس طرح پنجاب حکومت نکاح نامے کے ساتھ ختوم نبوت کے حلف نامے کو لازمی قرار دینے کے قانون کی منظوری دے چکی ہے اس طرح سندھ حکومت بھی اسے قانون کا حصہ بنائے ۔

اجلاس میں  امیر جماعت اسلامی سندھ محمد حسین محنتی ، جمعیت علمائے پاکستان کے قاضی احمد نورانی ، اسلامی تحریک پاکستان کے سید ناظر عباس تقوی ،جمعیت علمائے پاکستان کے سید عقیل انجم قادری ، اسلامی تحریک پاکستان سندھ کے صوبائی صدر سید اسد اقبال زیدی ، اسلامی تحریک کے صوبائی  سیکریٹری اطلاعات علی نقوی ، اسلامی جمہوری اتحاد سندھ کے نائب صدر علامہ مرتضےٰ خان رحمانی ، اسلامی تحریک پاکستان کے سید رضی حیدر زیدی ، جماعت غرباء اہلحدیث پاکستان کے سیکریٹری اطلاعات عمران احمد سلفی ، جماعت غرباء اہلحدیث پاکستان کے پریس سیکریٹری حشمت اللہ صدیقی ، مجلس وحدت مسلمین کے ملک غلام عباس اور ملی یکجہتی کونسل کے صوبائی  سیکریٹری اطلاعات زاہد عسکری نے شرکت کی۔