کوئی بھی جینئس لے آئیں، استحکام ہونے تک حالات بہتر نہیں ہوں گے، عمران خان

118
a plan

لاہور: تحریک انصاف کے چیئر مین اور سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ملکی مسائل کا حل صاف اور شفاف الیکشن ہے، اکثریت کے ساتھ آنے والی حکومت رول آف لا قائم کرے۔

عمران خان نے کہاکہ  پاکستان میں ہرجگہ مافیاز بیٹھے ہوئے ہیں، سب سے بڑا مافیاز رئیل اسٹیٹ مافیاز ہے۔ طاقتور حکومت ہو گی تو ملک میں اپنی پالیسیوں پرعملدرآمد کراسکے گی۔کوئی بھی جنیئس لے آئیں جب تک استحکام نہیں ہو گا حالات بہتر نہیں ہونگے،  طاقتورحکومت ہو گی توملک میں اپنی پالیسیوں پرعملدرآمد کراسکے گی، کمزورحکومت کے بس کی بات نہیں۔

چیئرمین پی ٹی آئی کا کہنا تھا کہ ہم نے اقتدارسنبھالا تو حالات بہت برے تھے، ہماری حکومت کے لیے بڑا مسئلہ کرنٹ اکائونٹ خسارہ تھا، کسی حکومت نے ایکسپورٹ بڑھانے پر توجہ نہیں دی، اگر سعودی عرب، چین، متحدہ عرب امارات مدد نہ کرتے تو حالات مزید خراب ہو جاتے، ہمارے دورمیں کورونا بہت بڑا کرائسز تھا۔

انہوں نے کہاکہ  لاک ڈاؤن لگانے پرمجھ پربڑا پریشرتھا، لاک ڈائون نہ لگانے پرمجھ پربڑی تنقید کی گئی، اگر ہم لاک ڈاؤن کر دیتے تو لوگوں نے بھوکے مر جانا تھا، کورونا کے دوران ہم نے بڑے فیصلے کیے، کرونا کے دوران آئی ایم ایف ہیڈ کو فون کر کے ان سے رعایت لیں، کرونا کے باوجود ہم نے معاشی حالات کو بہترکیا۔

 پی ٹی آئی چیئر مین کا کہنا تھا کہ جب ہمیں پتا چلا کہ میری حکومت کے خلاف سازش ہو رہی ہے، میں نے شوکت ترین کو نیوٹرل کے پاس بھیجا، میں نے کہا جن کو لایا جا رہا ہے ان کا تو 30 سال کا ٹریک ریکارڈ سب کے سامنے ہے، جب میں نے کہا یہ لوگ ملک کو ڈیفالٹ کی طرف لے جائیں گے، میرے خلاف ہی مقدمہ درج کر دیا گیا۔

عمران خان نے کہاکہ  کوئی بھی جنیئس لے آئیں جب تک استحکام نہیں ہو گا حالات بہتر نہیں ہونگے، آج ہم کدھر کھڑے ہیں کسی کوبھی نہیں پتا، ایک ماہ بعد کیا حالات ہونگے، گیلپ سروے کے مطابق 88 فیصد پاکستان کی سمت درست نہیں، جب تک الیکشن نہیں کرائیں گے ملک میں استحکام نہیں آئے گا۔