وفاقی جامعہ اردوکے مفاد کو نقصان پہنچانے نہیں دیں گے، پروفیسر ضیاء الدین

246
Federal University

کراچی(اسٹاف رپورٹر) قائم مقام شیخ الجامعہ وفاقی اردو یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد ضیاء الدین نے کہا ہے کہ جامعہ اردو ملک کا اہم اور نمایاں تعلیمی ادارہ ہے،یونیورسٹی کے مفاد کو نقصان پہنچانے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

پروفیسر ڈاکٹر محمد ضیاء الدین کا کہنا تھا کہ جامعہ میں کام کرنے والے تمام ملازمین میری اولادوں کی طرح ہیں جامعہ میں کام کرنے والے تمام ملازمین کو ان کا حق ملے گا حق تلفی نہیں کی جائے گی، حلف اللہ تعالیٰ سے کیا ہوا عہد ہے۔ آپ نے اصول وضوابط سے اپنی ذمہ داریاں ادا کرنی ہیں،یہ بات انہوں نے تقریب حلف برداری سے خطاب کرتے ہوئے کہی اس موقع پر سیلانی ویلفیئر ٹرسٹ کے علامہ بشیر احمد فاروقی مہمان خصوصی تھے۔ پروفیسر ڈاکٹر محمد ضیا ء الدین نے انجمن غیر تدریسی عمال کے نو منتخب عہدیداران صدر عدنان اختر،جنرل سیکریٹری سید ریحان علی دیگر عہدیداران سے حلف لیا۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر ڈاکٹر محمد ضیاء الدین کا کہنا تھا کہ ملازمین اور انتظامیہ مل کر اس جامعہ کی ترقی کیلئے کوشش کریں گے۔غیرتدریسی ملازمین کے مسائل کے حل کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی ڈیلی ویجز ملازمین کو بتدریج مستقل کرنے کی اور ملازمین کی ترقیوں ڈی پی سی کے حوالے سے بھی کوشش کی جائیگی۔

ان کا کہنا تھا کہ تعلیمی بنیاد پر بھی ملازمین کے گریڈز کو تبدیل کرنے اور ان کی صلاحیتوں کے مطابق عہدئے دیئے جائیں۔ 2018 کی ڈی پی سی کے حوالے سے سابقہ انتظامیہ سے جو کمی رہ گئی ہے اس پر نظر ثانی کی جائے گی، مالی مشکلات کی وجہ سے شعبہ میڈیکل کے حوالے سے مخلتف سرکاری و نجی ہسپتالوں اور میڈیکل ریلیف میں مقررہ رقم کو بڑھا دیا جائے تاکہ مہنگائی کے حساب سے ملازمین کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

پروفیسر ڈاکٹر محمدضیاء الدین کا کہنا تھا کہ جامعہ میں کام کرنے والے تمام ملازمین میری اولادوں کی طرح ہیں جامعہ میں کام کرنے والے تمام ملازمین کو ان کا حق ملے گا حق تلفی نہیں کی جائے گی۔ جامعہ کے مفاد کو نقصان پہنچانے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ ریٹائرڈ  و دوران ملازمت انتقال کرجانے والے ملازمین کے ورثاء کو ملازمت دینے کی ہر ممکن اقدام اٹھائیں گے۔

مہمان خصوصی علامہ بشیر احمد فاروقی کا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ پاکستان دنیا کا بہترین ملک تھا اور آج دنیا کے 10ویں نمبر پر ہے۔  ملک میں سیاسی صورتحال  بہتر ہے سیاست دان اس ملک سے مخلص نہیں ملک بحرانوں کا شکار ہے جس میں بڑھتی ہوئی مہنگائی، بے روزگاری، کرائم، بد حالی ہمارے اپنے اعمال کا نتیجہ ہے۔ ملازمین جس ادارے میں کام کریں سچائی، لگن دیانتداری سے کریں  جو ادارے کی ترقی کا ضامن ہے۔