اسکواڈ کا اعلان ہونے تک دل کا غبار نکالنے سے باز رہنا چاہیے تھا، شاہد آفریدی

164
اسکواڈ کا اعلان ہونے تک دل کا غبار نکالنے سے باز رہنا چاہیے تھا، شاہد آفریدی

کراچی:ورلڈ کپ کی متنازع سلیکشن پر انگلیاں اٹھنے کا سلسلہ بدستور جاری ہے جبکہ سابق آل رائونڈر شاہد خان آفریدی نے کہاہے کہ تجربہ کار کرکٹر مڈل آرڈر میں پاکستان کی اشد ضرورت ہیں، ان کی بینچ پر موجودگی بھی فائدہ مند ہوتی۔

انگلینڈ سے ہوم سیریز اور ورلڈ کپ کیلیے اعلان کردہ ٹی 20 اسکواڈ کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے، شاہد خان آفریدی نے بھی شعیب ملک کو منتخب نہ کرنے پر سلیکٹرز کو آڑے ہاتھوں لیا، وہ سمجھتے ہیں کہ سینئر کرکٹر کی موجودگی ٹیم کیلیے انتہائی مفید ثابت ہوتی۔

شعیب ملک گذشتہ برس یو اے ای میں کھیلے گئے ورلڈ کپ کیلیے ٹیم کا حصہ تھے،دورہ بنگلہ دیش ادھورا چھوڑنے کے بعد سے انھیں منتخب نہیں کیا گیا، حال ہی میں کھیلے گئے ایشیا کپ سے پاکستانی مڈل آرڈر کی کمزوری ایک بار پھر عیاں ہو گئی، واضح طور پرشعیب جیسے سینئر بیٹر کی کمی محسوس ہورہی ہے۔

شاہد خان آفریدی نے کہا کہ شعیب نے دنیا بھر میں کرکٹ کھیلی اور ہرجگہ عمدہ پرفارم کیا، وہ ہر فرنچائز کا پہلا انتخاب اور بہت زیادہ فٹ ہیں، اگر شعیب ملک بینچ پر بھی ہوتے تب بھی ان کی موجودگی خود بابر اعظم کیلیے فائدہ مند رہتی، اگر وہ پلان کا حصہ نہیں تھے تب بھی سلیکٹرز کو ان سے بات کرنا چاہیے تھی۔

سابق کپتان نے کہا کہ پاکستان کو کم سے کم شعیب ملک کو انگلینڈ کے خلاف ہوم سیریز کا حصہ تو بنانا ہی چاہیے تھا، 3 سے 4 میچز کھلا کر ان کی کارکردگی دیکھی جا سکتی تھی، ہمیں ایک مڈل آرڈر بیٹر کی اشد ضرورت اور شعیب ملک کو اس جگہ پر کھیلنے کا بہت زیادہ تجربہ ہے۔

شاہد خان آفریدی نے شعیب ملک کی متنازع ٹویٹ پر بھی اپنی رائے دی جس میں سینئر آل راونڈر نے ایشیاکپ فائنل میں شکست کے بعد کہا تھاکہ جانے کب ہم دوستی، پسند، ناپسند کے کلچر سے باہر آئیں گے، اللہ بھی ایمانداروں کی مدد کرتاہے۔

آفریدی نے کہا کہ میں سمجھتا ہوں شعیب ملک کو اس قسم کی ٹویٹ نہیں کرنا چاہیے تھی، ٹیم کے اعلان تک انتظار کرنا بہتر ہوتا، وہ اسکواڈ میں جگہ کے حقدار تھے۔