سیلابی پانی ختم ہوتے ہی ریلوے ٹریک بحال کر دیں گے، خواجہ سعد رفیق

119
can't gather millions

کوئٹہ: وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ سیلابی پانی ختم ہوتے ہی ریلوے ٹریک بحال کر دیں گے، خواجہ سعد رفیق کی زیرصدارت کوئٹہ میں اجلاس ہوا جس میں ڈی ایس ریلوے نے وفاقی وزیر کو سیلابی صورتحال پر بریفنگ دی۔

 اس موقع پر وفاقی وزیر ریلوے نے کہا کہ کوئٹہ ریلوے سٹیشن ٹریک کا جائزہ لیا، سیلاب کے باعث ریلوے ٹریک متاثر ہوئے ہیں اور پانی میں ڈوبے ہوئے ہیں تاہم ریلوے ٹریک کو بحال کرنے کے لیے عملہ مصروف عمل ہے لیکن کئی علاقوں میں اب بھی پانی کھڑا ہے۔

 خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ کوئٹہ تفتان ٹریک 104 مقامات سے متاثر ہوا جسے 30 ستمبر تک بحال کر دیں گے اور بولان میں بہہ جانے والے پل کو کچھ وقت درکار ہے، ڈیرہ اللہ یار سے جیکب آباد تک 11 کلو میٹر ٹریک پانی کے نیچے ہے اور پانی نیچے جاتے ہی نقصانات کا تخمینہ لگا کر مرمت کا کام شروع کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ  ایم ایل ون،ٹو اورتھری کے لیے ہمیں عالمی مالیاتی اداروں سے مدد لینا ہوگی، اس آفت میں ہر ادارہ اپنی ذمہ داریاں ادا کررہا ہے۔ وزیر ریلوے کا مزید کہنا تھا کہ کوئٹہ ائیر پورٹ کا بھی جائزہ لیں گے اور کوئٹہ ریلوے سٹیشن کی اپگریڈیشن کے لئے اقدامات کرنے کی کوشش کریں گے، گوادر میں ریلوے کا دفتر قائم کیا جا رہا ہے اور گوادر میں ہمارے پاس 285 ایکڑ زمین موجود ہے۔