آرمی چیف کے تقرر کیلیے وزیراعظم کا صوابدیدی اختیار ختم ہونا چاہیے، سراج الحق

268
insulted
siraj ul haq tarazoo convention

لاہور: امیر جماعت اسلامی سراج الحق کا کہنا ہے کہ دفاعی ادارہ کے سربراہ کی تقرری کے لیے وزیراعظم کا صوابدیدی اختیار ختم ہونا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ دفاعی ادارے کے سربراہ کی تقرری چیف جسٹس سپریم کورٹ کی طرز پر ہونی چاہیے۔ حکمران جماعتیں دفاعی اداروں کو سیاست کے لیے استعمال نہ کریں۔ اسٹیبلشمنٹ کو بھی چاہیے کہ وہ سیاست سے دور رہے۔

سراج الحق نے کہا کہ پی ڈی ایم اور پی ٹی آئی کی سیاست اسٹیبلشمنٹ کی مرہون منت ہے۔ آرمی چیف کی تقرری کے لیے دونوں کی دلچسپی یہی ظاہر کرتی ہے۔ جماعت اسلامی چاہتی ہے الیکشن کمیشن اور عدلیہ مکمل طور پر غیرجانبدار ہوں۔ انہوں نے کہا کہ تمام ادارے اپنی حدود میں رہیں گے تو ملک آگے بڑھے گا۔

امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ بجلی کے بلوں میں ظالمانہ ٹیکسز کے خلاف جماعت اسلامی ہائی کورٹ میں پٹیشن دائر کرے گی۔ امید کرتے ہیں کہ عدالت بجلی کے بلوں میں عوام کو ریلیف دے گی، حکومت لائن لاسسز اور چوری کا بوجھ غریبوں پر ڈال کر انہیں لوٹ رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایک اسلامی، جمہوری، کرپشن فری اور خدمت کرنے والی جماعت موجود ہے تو کیا اس کی موجودگی میں ظالم جاگیرداراور کرپٹ سرمایہ دار کا جھنڈا اٹھا کر اس کو اقتدار تک پہنچانا، اپنی ذات، اپنے بچوں اور پاکستان کے مستقبل کے ساتھ ظلم نہیں ہے؟۔ امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ آخری فرد کی گھر واپسی اور بحالی تک خدمت جاری رکھیں گے۔