ماں نے شیر خوار سمیت 4 بچے تربیلاجھیل میں پھینک دیے،3 جاں بحق

389
Tarbila jheel

ہری پور: ہری پور کے علاقہ تناول کے دور افتادہ موضع کلنجر ڈنہ کی رہائشی خاتون نے ڈیڑھ سال کے شیر خوار مزمل اور دس سالہ عائشہ سمیت اپنے چار بچے تربیلاجھیل میں پھینک د یئے جن میں سے تین جاں بحق جب کہ ایک پانچ سالہ محمد کو مقامی جواں سال لڑکے نے ڈوبنے سے بچا لیا۔

رپورٹ کے مطابق سنگدل ماں کو مبینہ طور پر گرفتار کرلیا گیا، معصوم بچوں کی ناگہانی اموات پر علاقہ میں کہرام مچ گیا، تینوں کی نعشیں ٹراما سنٹر منتقل کر دی گئیں۔

ذرائع کے مطابق محنت کش خان محمد کی زوجہ جس کی ایک روز قبل گھر والوں سے مبینہ طور پر گھر میں معمولی بات پر کوئی نوک جھونک ہوئی جس سے دل برداشتہ ہو کر اس نے اپنے چار بچے ڈیڑھ سالہ مزمل، پانچ سالہ محمد، سات سالہ عبد اللہ اور دس سالہ عائشہ کو گندف بیلا کے مقام پر تربیلہ جھیل میں پھینک دیا جن میں سے پانچ سالہ محمد کو قریب ہی مویشیوں کو پانی پلانے یا چرانے والے ایک چودہ سالہ نوجوان نے نکال کر اس کی جان بچا لی جب کہ باقی تینوں معصوم تربیلہ جھیل کی خونی موجوں کی نذر ہو کر ابدی نیند سو گئے۔

ذرائع کے مطابق اس دلخراش واقعہ کی اطلاع ملتے ہی چوکی گندف پولیس موقع پر پہنچ گئی اور زوجہ خان محمد کو حراست میں لے لیا جب کہ ہری پور ٹراما سنٹر سے پوسٹ مارٹم کے بعد تینوں معصوم بچوں کی نعشیں ورثا کے حوالے کر دی گئی ہیں۔