اسپیکر قومی اسمبلی کو اپوزیشن لیڈر کے انتخاب پر 30 دن میں فیصلے کا حکم

178
ordered to decide

لاہور: لاہور ہائی کورٹ نے اسپیکر قومی اسمبلی کو اپوزیشن لیڈر راجا ریاض کو عہدے سے ہٹانے کی درخواست پر قانون کے مطابق 30 دنوں میں فیصلہ کرنے کی ہدایت کر دی۔

لاہور ہائی کورٹ میں اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی راجا ریاض کو عہدے سے ہٹانے کیلئے دائر درخواست پر جسٹس مزمل اختر شبیر نے سماعت کی، ایڈیشنل اٹارنی جنرل عدالت میں پیش ہوئے۔ عدالت نے درخواست گزار شہری اظہر صدیق سے استفسار کیا کہ اس درخواست میں تو پٹیشنر رکن اسمبلی ہی نہیں، کیا رکن اسمبلی نہ ہونے پرعام شہری اس طرح کی درخواست دے سکتا ہے۔

وکیل درخواست گزار نے موقف پیش کیا کہ یوسف رضا گیلانی کیس میں میری درخواست کا اسپیکر نے ہی فیصلہ کیا تھا۔ عدالت نے ایڈیشنل اٹارنی جنرل سے استفسار کیا کہ راجا ریاض کے مقابلے میں کوئی امیدوار نہیں تھا تو پھر ان کا انتخاب تو ہونا تھا، اگر اسپیکر کے سامنے ایک ہی امیدوار آئے تو قانون کیا کہتا ہے۔

ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو موقف پیش کیا کہ وزیراعظم کے انتخاب کے فوری بعد اسپیکر اپوزیشن لیڈر کے انتخاب کا دن مقرر کرتا ہے، اگر اسپیکر کے سامنے ایک ہی امیدوار آتا ہے تو اسی کا انتخاب ہوگا، اسپیکر نے قانونی دائرہ اختیار میں رہتے ہوئے اپوزیشن لیڈر کا نوٹیفکیشن کیا۔

عدالت نے اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی راجا ریاض کو عہدے سے ہٹانے کی درخواست پر اسپیکر قومی اسمبلی راجا پرویز اشرف کو 30 دن میں قانون کے مطابق فیصلہ کرنے کی ہدایت کردی۔