حکومتی اتحادی جماعتوں کا پی ٹی آئی کیخلاف سخت فیصلے لینے پر اتفاق

198

اسلام آباد: حکومت میں شامل پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کی اتحادی جماعتوں کے سربراہ اجلاس میں پی ٹی آئی کے خلاف سیاسی اور قانونی لحاظ سے سخت فیصلے لینے پر اتفاق کرلیا گیا۔

خبر رساں اداروں کے مطابق وزیراعظم ہاؤس میں پی ڈی ایم سربراہی اجلاس ہوا، جس کی صدارت وزیراعظم شہباز شریف نے کی۔ اجلاس میں وفاقی وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ نے الیکشن کمیشن کی جانب سے پی ٹی آئی ممنوعہ فنڈنگ کیس کے فیصلے سے متعلق شرکا کو تفصیلی بریفنگ دی۔

اجلاس میں وزیراعظم کے علاوہ پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان، آفتاب خان شیر پاؤ، بلاول بھٹو زرداری، مریم اورنگزیب، انس نورانی، احسن اقبال سمیت دیگر رہنما شریک ہوئے۔ اجلاس میں سیاسی اور قانونی کمیٹیاں تشکیل دی گئیں۔ذرائع کے مطابق پی ڈی ایم کا تحریک انصاف کے خلاف سیاسی اور قانونی محاذ پر سخت فیصلے لینے پر اتفاق  ہوا ہے، جس کے بعد قانونی کمیٹی نے فوری طور پر کام شروع کر دیا ہے۔

قانونی کمیٹی الیکشن کمیشن کے فیصلے کی روشنی میں پی ٹی آئی کے خلاف قانونی کاروائی تجویز کرے گی۔واضح رہے کہ  قانونی کمیٹی میں تمام جماعتوں کے قانونی ماہرین شامل ہیں۔ دوسری جانب سیاسی کمیٹی سیاسی محاذ پر اقدامات تجویز کرے گی۔ الیکشن کمیشن کے فیصلے پر قانونی کمیٹی کی رائے کی روشنی میں کابینہ سے کارروائی کی منظوری لی جائے گی۔

ذرائع کے مطابق پیپلز پارٹی کے رہنما خورشید شاہ کو پی ڈی ایم کی سیاسی کمیٹی کا سربراہ مقرر کیا گیا ہے جبکہ وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ قانونی کمیٹی کے سربراہ ہوں گے۔  پی ڈی ایم کا سربراہی اجلاس کل بدھ کو دوبارہ ہوگا۔