بے اعتبار…………اقبال

181

زندگی اقوام کی بھی ہے یونہی بے اعتبار
رنگ ہائے رفتہ کی تصویر ہے ان کی بہار

اس زیاں خانے میں کوئی ملّتِ گردْوں وقار
رہ نہیں سکتی ابد تک بارِ دوشِ روزگار