مسلسل ہونے والی موسلادھاربارشوں کے دوران مختلف حادثات میں 3 افراد جاں بحق

159

 

شہر میں مسلسل تیسرے روز وقفے وقفے سے جاری رہنے والی ہلکی اور تیز بارش کے دوران مختلف حادثات کے باعث مزید 3 افراد جاں بحق ہوگئے۔ذرائع کے مطابق تینوں افراد بجلی کا کرنٹ سے جاں بحق ہوئے۔نیوکراچی کے علاقے سیکٹر 16 بی میں کرنٹ لگنے سے فیکٹری ورکر جاں بحق ہوگیا۔گبول ٹاؤن پولیس نے بتایا کہ 35 سالہ ذوالفقار کو طالب پلاسٹک کمپنی کے اندر کرنٹ لگا جس کی لاش کو قانونی کارروائی کے لیے عباسی شہید ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔پولیس سرجن ڈاکٹر سمیہ سید نے بتایا کہ 32 سالہ محمد ارشد کی لاش سعید آباد کی قائم خانی کالونی سے سول ہسپتال کراچی لائی گئی، اس کی موت کا سبب بھی کرنٹ لگنا تھا۔پولیس سرجن ڈاکٹر سمیہ سید نے مزید بتایا کہ ایک اور شخص 23 سالہ عثمان امین کو کورنگی کے علاقے بلال کالونی میں بجلی کا جھٹکا لگا، کرنٹ کے باعث نوجوان کی موت ہوگئی جس کی لاش کو کو جناح ہسپتال لایا گیا۔واضح رہے کہ گزشتہ روز کراچی میں وقفے وقفے سے جاری موسلادھار بارش کے باعث مختلف حادثات میں ایک بچی سمیت 9 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔پولیس، ہسپتال اور ریسکیو ذرائع کے مطابق شہر کے مختلف علاقوں میں موسلا دھار بارش کی وجہ سے کرنٹ لگنے سے 4 شہری جاں بحق ہوگئے جبکہ دیگر 5 افراد پانی میں ڈوب کر موت کے منہ میں چلے گئے تھے۔دوسری جانب ٹریفک پولیس کے ترجمان کے مطابق مسلسل بارش کے باعث شہر کی کئی سڑکیں زیر ا?ب ہیں جس کے باعث ٹریفک کی روانی متاثر ہوئی ہے۔ترجمان نے بتایا کہ سپرہائی وے پر بارش کا پانی جمع ہونے کی وجہ سے نیو سبزی منڈی سے ٹول پلازہ کی جانب جانے والے ٹریفک کی روانی بری طرح متاثر ہوئی۔جب کہ بارش سے کچھ علاقوں میں سڑکوں کو بھی کافی نقصان پہنچا ہے۔ترجمان کے مطابق نیشنل ہائی وے پر منزل پمپ کے قریب گڑھا پڑھ گیا ہے جہاں ایک ٹرالر پھنسنے کے نتیجے میں ٹریفک کو متبادل سڑکوں کی جانب موڑ دیا گیا ہے۔ٹریفک پولیس ترجمان کے مطابق ملیر ندی پل پر بھی بارش کا پانی جمع ہونے سے گڑھے بن گئے ہیں