چین نے بھی مقبوضہ کشمیرمیں جی ٹوئنٹی اجلاس کی مخالفت کردی

165

بیجنگ : چین نے بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں جی ٹوئنٹی اجلاس بلانے کی مخالفت کر تے ہوئے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر پر چین کا موقف مستقل اور واضح ہے‘ علاقائی امن و استحکام کیلئے تنازعات کو بات چیت اور مشاورت سے حل کرنا چاہیے‘مسئلہ کشمیراقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہیے ۔

چینی ترجمان کے مطابق چین اس اجلاس میں شرکت کرنے کے معاملے کو دیکھے گا۔چینی وزارت خارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر پر چین کا مؤقف مستقل اور واضح ہے، مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کےمطابق حل ہونا چاہیے۔چینی ترجمان کا کہنا تھا کہ علاقائی امن و استحکام کےلیے تنازعات کو بات چیت اور مشاورت سے حل کرنا چاہیے،

متعلقہ فریقین کو مسئلہ پیچیدہ بنانے والے اقدامات سے گریز کرنا چاہیے۔چینی وزارت خارجہ کے ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ جی ٹوئنٹی بین الاقوامی اقتصادی اور مالیاتی تعاون کا سب سےبڑا فورم ہے، تمام بڑی معیشتوں سےمطالبہ ہےعالمی معیشت کی مستحکم بحالی پر توجہ دیں، اقتصادی تعاون کوسیاسی رنگ دینے سے گریز کیا جائے۔ان کا کہنا تھا کہ

تمام بڑی معیشتیں عالمی معاشی نظم و نسق کو بہتر بنانے میں مثبت کردار ادا کریں۔خیال رہے کہ بھارت کی جانب سے اگلے سال جی ٹوئنٹی اجلاس جموں و کشمیر میں کرانے کا کہا گیا تھا۔