عربوں اور مسلم اقوام کو قابض ریاست کا راستہ روکنا چاہیے، اسماعیل ہانیہ

265

مقبوضہ بیت المقدس: حماس کے سیاسی بیورو کے سربراہ اسماعیل ہانیہ نے اس امر کی شدید مذمت کی ہے کہ بعض عرب ممالک قابض ریاست اسرائیل کے ساتھ تعلقات کے لیے تجاوز پر مبنی پالیسی اختیار کر رہے ہیں،ان ممالک کا یہ رویہ فلسطین کی تحریک آزادی کے لیے سخت نقصان دہ ہے۔

اسماعیل ہانیہ نے بیروت میں قومی اسلامی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آجکل علاقائی سطح پر جو کچھ ہو رہا ہے یہ انتہائی خطرناک ہے نیز عرب ممالک اور اسرائیل کے درمیان نارملائزیشن سے بہت آگے کی بات ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ عربوں کی قابض اسرائیل کے ساتھ تعلقات کی نارملائزیشن بھی ایک جرم ہے جو اسرائیل کے لیے خدمت کی انجام دہی ہے اور فلسطین کے لیے خطرناک ہے۔ اس لیے ہم خبردار کرتے ہیں کہ صہہیونی رجیم کو علاقے میں مضبوط اور مستحکم کرنے کے مترادف ہے۔

فلسطینی قائد نے زور دے کر کہاکہ علاقے میں جو کچھ ہو رہا ہے کہ فلسطین کی آزادی کے لیے مزاحمت کو فلسطین اور لبنان میں ٹارگٹ کرنا ہے۔

ہم فلسطینی عوام علاقے میں اپنی تزویراتی گہرائی چاہتے ہیں اور عربوں اور مسلم اقوام کو قابض ریاست کا راستہ روکنا چاہیے لیکن اس کے برعکس جو کیا جارہے ہے اس سے مسجد اقصیٰ کو خطرات لاحق ہو رہے ہیں، فلسطینی پناہ گزینوں کے حق واپسی کو ٹارگٹ کیا جارہا ہے۔ یہ قبول نہیں کیا جاسکتا۔