رئیل اسٹیٹ، کار ڈیلروں، ریسٹورنٹس اور دیگر شعبوں کو ٹیکس نیٹ میں لانے کا اعلان

219
لارج ٹیکس پیئرز کراچی آفس نے ریونیو وصولی میں بڑاسنگ میل عبور کرلیا۔

اسلام آباد: حکومت نے رئیل اسٹیٹ سیکٹر کے بروکرز، بلڈرز، کارڈیلروں، ریسٹورنٹس اور سیلونز کو باقاعدہ ٹیکس نیٹ میں لانے کا اعلان کردیا ہے۔

میڈیا ذرائع کے مطابق وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے اپنے ٹوئٹر بیانات میں کہا ہے کہ ہم مرحلہ وار لاکھوں دکانوں کو ٹیکس نیٹ میں لا رہے ہیں، جیولرز کو بھی ٹیکس نیٹ میں لایا گیا ہے اور یقین رکھیں کہ میں آئندہ چند مہینوں میں ان تمام پیشہ ور افراد کو نیٹ میں لے آئیں گے۔

مفتاح اسماعیل نے کہا کہ چھوٹے دکان داروں، جیولرز کو ٹیکس نیٹ میں لانے کے لیے میں نے ایسوسی ایشنز سے بات کی ہے اور یہ فیصلہ ان کی مشاورت سے کیا ہے۔

اب میں رئیل اسٹیٹ کے بیوپاریوں، بلڈرز، ہاؤسنگ سوسائٹی ڈیولپرز، کار ڈیلرز، ریسٹورنٹس اور سیلونز وغیرہ کو ٹیکس نیٹ میں لانے کی کوشش کروں گا لیکن اس میں سے کچھ بھی زبردستی نہیں ہو گا، بلکہ مشاورت سے کیا جائے گا۔