تجاوزات اور پانی چوروں کیخلاف گھیرا تنگ

182

کراچی: حکومت سندھ نے کراچی میں غیرقانونی عمارتوں، تجاوزات اور پانی چوروں کیخلاف سخت کارروائی کا فیصلہ کرتے ہوئے حکمت عملی مرتب کرلی ہے۔ اس حوالے سے ذرائع نے بتایا کہ چیف سیکرٹری سندھ ڈاکٹر محمد سہیل راجپوت کی زیرصدارت اجلاس ہوا جس میں سندھ حکومت نے تجاوزات اور پانی چوروں کو سخت سزائیں دینے کی حکمت عملی مرتب کی گئی۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیف سیکریٹری سندھ نے بتایا کہ کراچی شہر میں غیر قانونی عمارتوں اور تجاوزات کے ذمہ داروں کے خلاف آپریشن کرتے ہوئے سخت کارروائی کی جائے گی۔ ایس بی سی اے کے نمائندے نے بتایاکہ کراچی میں اس وقت 6 ہزارسے زائد غیرقانونی عمارتیں ہیں، چیف سیکریٹری سندھ نیغیرقانونی عمارتوں کی رپورٹ طلب کرلی۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی سے منظور شدہ عمارتوں پر کیو آرکوڈ لگایا جائے گا، کیو آرکوڈ ہرتعمیر ہونے والی بلڈنگ کے سامنے آویزاں کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ اجلاس میں کراچی کے ضلع ویسٹ سے پانی کی چوری کیخلاف آپریشن کا فیصلہ کیا گیا, صوبائی وزیر ناصر حسین شاہ نے بتایا کہ کراچی میں سب سے زیادہ پانی ضلع ویسٹ میں چوری کیا جارہا ہے۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیف سیکریٹری سندھ نے کہا کہ تجاوزات کے خاتمے کیلئے اینٹی انکروچمنٹ فورس کو مزید عملہ اور اختیارات دیے جائیں گے۔