”حکومت کو سود کے خلاف شرعی عدالت کے فیصلے سے رو گردانی نہیں کرنے دی جائے گی “

255

  کراچی: نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان اسد اللہ بھٹوکا کہنا ہے کہ سود کے خلاف تاریخی فیصلے کی پشت پر پوری قوم ہے اور حکومت کو اس فیصلے سے ہر گز رو گردانی نہیں کرنے دی جائے گی۔

ادارہ نور حق میں جمعیت اتحاد العلماء کراچی کے ذمہ داران کےاجلاس  سے خطاب کرتے ہوئے اسد اللہ بھٹو نے کہا کہ 9جون کو کراچی بھر کے علماء کرام کا ایک عظیم الشان ”علماء کنونشن“ منعقد کیا جائے گا اور تمام مدارس اور مساجد کے آئمہ کرام سے رابطہ کیا جائے گا۔

اسد اللہ بھٹو نے کہا کہ سود ایک ایسا معاملہ ہے جس پر تمام عالم اسلام متفق ہے کہ یہ اللہ اور اس کے رسول ؐ سے کھلی بغاوت ہے، جماعت اسلامی نے ہمیشہ نہ صرف اس کے خلاف آواز اُٹھائی ہے بلکہ قانونی اور عدالتی جنگ بھی لڑی ہے اور سودی نظام سے نجات کے لیے قابل عمل تجاویز بھی پیش کی گئی ہیں۔

انہوں نے مزید کہاکہ  اس سلسلے میں پروفیسر خورشید احمد نے گرانقدر کام کیا ہے۔ وفاقی شرعی عدالت کے تاریخی فیصلے میں متعین وقت بھی دیا گیا ہے اور اگر اس وقت کے اندر عمل درآمد نہ ہوا تو یہ فیصلہ از خود نافذ العمل ہو جائے گا۔

اسد اللہ بھٹو نے کہا کہ اس تاریخی فیصلے پر وفاقی شرعی عدالت اور اسلامی نظریاتی کونسل دونوں قابل ِ مبارک باد ہیں، انہوں نے کہا کہ ماضی میں بھی سود کے خلاف فیصلہ دیا جا چکا ہے لیکن اس وقت کے وزیر اعظم میاں نواز شریف نے سپریم کورٹ میں یہ فیصلہ چیلنج کر دیا تھا۔

رہنما جماعت اسلامی کا کہنا تھا کہ پھر پرویز مشرف نے بھی اس فیصلے کے خلاف اپیل کی۔ اس لیے ضروری ہے کہ اس فیصلے پر عمل درآمد کے لیے ایک موثر کمیٹی بنائی جائے۔ ماہرین معیشت، نظام بینکاری اور کامرس اور ٹریڈز سے وابستہ افراد سے رابطہ کر کے انہیں متحرک اور عوام الناس کو اس حوالے سے بیدار اور منظم کیا جائے۔ مولانا عبد الوحید نے کہا کہ جمعیت اتحاد العلماء اس سلسلے میں اپنا بھر پور کردار کرے گی۔ علماء کرام، دینی مدارس کے طلبہ و اساتذہ اور عوام کے تعاون اور دباؤ کے ذریعے وفاقی حکومت کو اس فیصلے سے کسی صورت انحراف نہیں کرنے دیا جائے گا۔ برجیس احمد نے کہا کہ ہماری ذمہ داری ہے کہ علماء کرام و آئمہ مساجد سے زیادہ سے زیادہ رابطہ کریں اور یہ کام فوری طور پر شروع کردیا جائے۔  علماء کرام اپنے خطبات میں اس تاریخی فیصلے اور سود کی حرمت کے حوالے سے عوام کے اندر آگاہی اور اس پر عمل درآمد کے لیے اپنا کردار ادا کریں ایسا کریں گے تو اس کے بہت مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔مفتی علی زمان کشمیری نے کہا کہ اس مہم اور تحریک کو انتہائی منظم انداز میں لے کر چلنا ہے، اس مہم اور 9جون کو علماء کنونشن کے سلسلے میں تمام اضلاع میں فوری طور پر اجلاس طلب کر کے تیاریاں شروع کر دی جائیں۔